خسارے کا شکار قومی ایئرلائن کے افسران‘ یورپ کے دورے پر -
The news is by your side.

Advertisement

خسارے کا شکار قومی ایئرلائن کے افسران‘ یورپ کے دورے پر

کراچی: پی آئی اے میں ایک جانب تو تنخواہوں اور پنشن کی ادائیگی معاشی مشکلات کے سبب بحرانی کیفیت کا شکاررہتی ہے‘ تاہم افسران کے بیرونِ ملک دوروں پر کروڑوں روپے خرچ کردیے جاتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق افسران کا ایک وفد چیف کمرشل آفیسر کی سربراہی میں جمعے کے روز ادارے کے خرچے پر یورپ روانہ ہورہا ہے‘ یہ وفد 10 روز تک ادارے کے خرچے پر یورپ کا دورہ کرے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پی آئی اے کے چیف کمرشل آفیسر بلال منیر شیخ کی سربراہی میں 3رکنی وفد جمعہ کو یورپ روانہ ہورہا ہے‘ مذکورہ افسرانروزانہ او سی ایس(اون کارپوریشن سروسز )کے نام پر یومیہ 400ڈالر یومیہ الاوئنس بھی لیں گے۔

یاد رہے کہ پی آئی اے پہلے ہی اربوں روپے کے خسارے سے دوچار ہے اور اس کی بنیادی وجہ افسران کی شاہ خرچیاں قرار دی جاتی ہیں۔ یورپ جانے والے وفد کی سفری دستاویزات اے آروائی نیوز کو موصول ہوگئی ہیں۔

یاد رہے کہ ملازمین کو تنخواہیں‘ ریٹائرڈ ہونے والے ملازمین کو پنشن دینے کے لیے پی آئی اے کے پاس رقم بھی موجود نہیں ہے لیکن پھر بھی افسران کے بیرونِ ملک دورے پرقومی ایئرلائن خزانے سے کروڑوں روپے خرچ کررہی ہے۔

یاد رہے کہ مالی بحران کے شکار اہم قومی ادارے پی آئی اے کی انتظامیہ نے گزشتہ ماہ ملازمین پر جبری ریٹائرمنٹ کی تلوار چلا تے ہوئے دو افسران کو بغیر پیشگی اطلاع دیے ملازمتوں سے فارغ کردیا گیا ہے جس سے دیگر ملازمین میں بے چینی اور خوف کی لہر دوڑ گئی ہے۔

قومی ایئر لائن کی انتظامیہ کی جانب سے جدہ میں کوآرڈنیٹر آفیسر شاہ محمد جمالی اور سیل پروموشن افسرحمید کلہوڑو کو ملازمت سے سبکدوش کرنے کا لیٹر دے دیا گیا تھاجب کہ اسائمنٹ افسران سمیت 30 سے زائد دیگر افسران کو بھی فارغ کرنے پر غور کیا جا رہا ہے جس کے لیے افسران کی فہرست مرتب کی جا رہی ہے۔

یاد رہے کہ پی آئی اے کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمار میں کہا گیا تھا کہ قومی ایئر لائن نے سال 2017 میں اٹھاسی ارب روپے کا ریونیو حاصل کیا تاہم ایئرلائن کو چھیالیس ارب روپے نقصان کا بھی سامنا کرنا پڑا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں