The news is by your side.

پی آئی اے انتظامیہ کے پالپا کے ساتھ مذاکرات ناکام، مسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا

کراچی : پی آئی اے کے پائلٹس کی ہڑتال ساتویں روز میں داخل ہوگئی ہے،فریقین مسائل حل کرنے کے بجائے الزام تراشیوں میں مصروف ہیں، ہڑتال کے باعث مسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے.

پی آئی اے انتظامیہ نےمذاکرات کیلئے پیشگی شرائط مسترد کردیں جبکہ پالپا کے صدر کا کہنا ہے کہ مذکرات میں فوج یا کسی جج کو ثالث بنایا جائے.

ترجمان قومی ایئر لائن نے دعویٰ کیا کہ پائلٹس انتظامیہ کے ساتھ ہیں آج کوئی بھی پرواز منسوخ نہیں ہوئی، عامرمیمن کا کہنا تھا کہ انتظامیہ کو مذاکرات کیلئے پیشگی شرائط قبول نہیں، پالپا کے صدر کیپٹن عامر ہاشمی نےفوج یا جج کو ثالث بنانے کا مطالبہ کردیا ہے، پالپا صدر نے کہا کہ پی آئی اے انتظامیہ عوام کو گمراہ کر رہی ہے، پائلٹس ہڑتال پر نہیں.

بیشتر مسافر بھری پروازیں کراچی ، اسلام آباد ، لاہور ، ملتان اور فیصل آباد سے گھنٹوں تاخیر کے بعد روانہ ہوئی، پائلٹس اور پی آئی اے انتظامیہ کے اختلافات میں مسافر ذہنی اور جسمانی کرب کا شکار ہوئے مگر اطلاع دی گئی کہ پائلٹ بیمار ہوگئے، سات روز سے جاری لڑائی کے دوران اٹھاسی سے زائد پروازیں منسوخ ہوئے، جس سے پچاس کروڑ روپے سے زائد کا نقصان ہوا جبکہ زیادہ تر مسافر نے اپنے ٹکٹ ریفنڈ کروا کر نجی ایئرلائن کے ٹکٹ خریدرہے ہیں.

وزیراعظم کا کرایوں میں اضافہ فوری واپس لینے کے حکم کے باوجود نجی ایئر لائن نے کرایوں میں اضافہ کرکے حکومتی اعلی منصب کی دھجیاں بکھیر دیں ،مگر کوئی نہیں جو وزیراعظم کے کرایوں میں کمی کے حکم پر عمل کروا سکے.

دوسری جانب سینیٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی نے پالپا اور پی آئی اے تنازعے سے متعلق سے دو بجے پارلیمنٹ لاجز میں اجلاس طلب کرلیا، سینیٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی نے معاملہ حل کرنے کیلئے اجلاس بلا لیا ہے، اجلاس دوپہر دو بجے پارلیمنٹ لاجز میں ہوگا.

حکومت کی جانب سے وزیرِاعظم کے معاون برائے ہوا بازی شجاعت عظیم اجلاس میں شرکت کریں گے، چیئرمین پی آئی اے ناصر جعفر،ڈی جی سول ایوی ایشن ،ڈائریکٹر فلائٹ آپریشن اور پالپا کے رہنما شریک ہوں گے.

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں