The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کا خسارہ آمدن کے نصف سے تجاوز کرگیا

کراچی: قومی ایئر لائن نے گزشتہ سال کیا کمایا کیا گنوایا‘ منظر عام پر آگیا‘ ایئر لائن نے جتنے پیسے کمائے اس کے آدھے کے نقصان میں رہے‘ خسارے کے سبب تنخواہوں کی ادائیگی بھی خطرے میں پڑگئی ہے۔

اے آروائی نیوز کو موصول ہونے والے ابتدائی اعدادوشمار کے مطابق پی آئی اے نے سال 2017 میں اٹھاسی ارب روپے کا ریونیو حاصل کیا تاہم ایئر لائن کو چھیالیس ارب روپے نقصان کا بھی سامنا کرنا پڑا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پی آئی اے کی ناقص تجارتی پالیسی اوراضافی اخراجات کی وجہ سے ادارے کو ایک سال میں کل آمدن کے نصف سے زائد کا نقصان برداشت کرنا پڑا ہے۔ پی آئی اے نے پہلی سہہ ماہی میں 21 ارب روپے کمائے اور 11 ارب روپے کا نقصان کیا۔

دوسری سہ ماہی میں ادارے نے22ارب روپے کا روینیو حاصل کیا11.5ارب روپے کا نقصان اٹھایا۔ تیسری سہ ماہی میں پی آئی اے کا ریوینیو 24ارب روپے رہا اور نقصان کا تخمینہ 8ارب روپے لگایا گیا ہے۔

چوتھی سہ ماہی میں اکیس ارب روپے کا روینیو حاصل کیا اور پندرہ ارب روپے سے زائد کا نقصان کیا۔ مجموعی طور پر ادارے نے 88 ارب روپے حاصل کیے اور 46 ارب سے زائد کا نقصان اٹھایا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ پی آئی اے کو گزشتہ سال سب سے زیادہ خسارہ نیویارک اسٹیشن بند کرنے کے سبب ہوا۔ ادارے کا مجموعی خسارہ تین سو ارب روپے سے بھی تجاوز کرچکا ہے۔

یہ بھی بتایا جارہا ہے کہ خزانہ خالی ہونے کی وجہ سے پی آئی اے ملازمین کو رواں ماہ کی تنخواہ کی ادائیگی بھی مشکل میں پڑ گئی ہے۔ یاد رہے کچھ دن قبل ہی پی آئی اے نے اپنے ملازمین کو فراہم کی جانے والی طبی سہولیات کو آؤٹ سورس کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔ قومی ایئر لائن اس مد میں ہر سال ساڑھے تین ارب روپے سے زائد خرچ کرتی ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں