pia پی آئی اے کی سعودی عرب اورچین کے لئے پروازوں کی تعداد میں اضافہ
The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کی سعودی عرب اورچین کے لئے پروازوں کی تعداد میں اضافہ

کراچی : پی آئی اے نئے مقامات کیلئے پروازیں شروع کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے جبکہ سعودی عرب اور چین کے لئے پروازوں کی تعداد میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔

ترجمان پی آئی اے کے مطابق اس بات کا فیصلہ پی آئی اے کے پروازوں کے نیٹ ورک کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد کیا گیا ہے۔ ترجمان نے بتایا کہ پی آئی اے نے خسارے میں کمی لانے کے لئے ایک جامع بزنس پلان مرتب کیا ہے جس میں اخراجات میں کمی اور ریونیو میں اضافہ کر کے مسافروں کی سہولیات میں بہتری لائی جائے گی۔

ترجمان نے بتایا کہ جلد ہی جدہ کے لئے ہفتہ وار پروازوں کی تعداد 28 سے بڑھا کر31 کی جارہی ہے اسی طرح مدینہ کے لئے ہفتہ وار پروازوں کی تعداد9 سے 10 کی جارہی ہے۔

مستقبل میں سی پیک کی وجہ سے ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے بیجنگ کے لئے اسلام آباد اور کراچی سے ہفتہ وار پروازوں کی تعداد دو سے بڑھا کر چار کی جارہی ہے۔اسی طرح اندرون ملک پروازوں کے دائرہ کار میں بھی وسعت کی جارہی ہے۔

چین کے مقام گوانگزو، سعودی عرب میں القصیم اور زائرین کی سہولت کے لئے ایران کے شہر مشہد کے لئے بھی پروازیں شروع کی جارہی ہیں۔ اس سلسلے میں پی آئی اے کے بوئنگ 777 طیاروں کی از سر نو تزئین و آرائش کی گئی ہے اور جدید ترین دوران پرواز انٹرٹینمنٹ سسٹم کو فعال کیا جارہا ہے۔

کیبن کریو کی نئی یونیفارم بھی متعارف کرائی گئی ہے جس کو عوام کی جانب سے پسند کیا گیا ہے اسی طرح گراؤنڈ ہینڈلنگ سٹاف کی یونیفارم بھی تبدیل کی جارہی ہے اور ان کو کسٹمرز کیئر کی ٹریننگ بھی دی جارہی ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ پروازوں کے شیڈول کا مکمل طور پر جائزہ لینے کے بعد اس بات کا فیصلہ کیاگیا ہے نئے روٹس کے لئے پروازیں شروع کی جائیں ، منافع بخش روٹس پر پروازوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے اور نقصان میں جانے والے روٹس پر پروازوں کو وقتی طور پر بند کر دیا جائے۔

کویت اور سلالہ کے لئے پروازوں کو عارضی طور پر معطل کیا جارہا ہے ان پروازوں کے مسافروں کو متبادل انتظامات کے ذریعے ان کی منزل مقصود تک پہنچایا جائے گا تاہم ان پروازوں کو دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ خالصتاً کاروباری مفاد کو مدنظر رکھ کر کیا جائے گا۔

ترجمان نے بتایا کہ ائر لائن انتظامیہ کی ان مجموعی کاوشوں سے ائر لائن کو دوبارہ سے منافع بخشی کی جانب میں خاطر خواہ مدد ملے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں