The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کو زائد المیعاد طیارے استعمال کی اجازت دینے سے انکار

کراچی : سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) نے پی آئی اے کو زائد المیعاد طیاروں کے استعمال کی اجازت نہ دینے کا مبینہ فیصلہ کرلیا، پی آئی اے نے تین ائر بس 310 طیاروں کو محدود مدت کے لئے دوبارہ استعمال کرنے کی اجازت طلب کی تھی۔

تفصیلات کے مطابق سی اےاے نے پی آئی اے کو زائد المیعاد طیاروں کے استعمال کی اجازت دینے سے انکار کردیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ پی آئی اے نے سی اے اے کی جانب سے 3ریٹائرڈ ایئربس 310 طیاروں کے استعمال کی اجازت مانگی گئی تھی۔

رجسٹریشن کے حامل طیاروں کو پی آئی اے دسمبر 2016 میں اپنے فلیٹ سے ریٹائر کر چکی ہے، پی آئی اے نے کچھ عرصہ کے لئے ان طیاروں کے استعمال کی اجازت کے لئے سیکرٹری ایوی ایشن کو خط لکھا تھا۔

ذرائع کے مطابق بیس سال سے زائد پرانے طیاروں کے استعمال پر قومی ایوی ایشن پالیسی میں بھی پابندی عائد ہے، اس کے علاوہ ایئر لائن نے طیاروں کے انجن کے تین سو سے زائد سائیکلز استعمال کے لئے ایئربس کمپنی سے بھی اجازت طلب کر رکھی ہے۔

یاد رہے کہ ایئر بس کمپنی کی اجازت بھی سول ایوی ایشن اتھارٹی پاکستان کے ایئر وردینس ڈیپارٹمنٹ کی کلیئرنس سے مشروط ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سیکرٹری ایوی ایشن کی جانب سے مذکورہ خط اجازت کے لئے سی اے اے کو روانہ کیا گیا تھا، سی اے اے کے شعبہ ائر وردینس نے طیاروں کو دوبارہ استعمال کی کلیئرنس نہ دینے کا مبینہ فیصلہ کیا ہے، شعبہ ائر وردینس کی جانب سے رپورٹ چند روز میں ڈی جی سی اے اے کو روانہ کر دی جائے گی۔

اس حوالے سے ترجمان پی آئی اے مشہود تاجور نے کہا ہے کہ طیاروں کے دوبارہ استعمال کا فیصلہ سی اے اے اور ائر بس کمپنی کی اجازت ملنے پر ہی کیا جائے گا، کلیئرنس نہ ملنے پر طیاروں کو بطور اسکریپ فروخت کر دیا جائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں