The news is by your side.

Advertisement

پی آئی سی حملہ کیس؛ گرفتار وکلا کو جوڈیشل ریمانڈ پر بھیج دیا گیا

لاہور:‌ انسداد دہشتگردی کی عدالت نے پی آئی سی حملہ کیس میں گرفتار وکلا کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا جب کہ زخمی وکلا کا میڈیکل کرانے کا حکم دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز پی آئی سی میں ہنگامہ آرائی کے دوران گرفتار کیے گئے وکلاء کو سخت سیکورٹی میں انسداد دہشتگردی کی عدالت میں لایا گیا جہاں جج عبدالقیوم نے کیس سماعت کی۔

وکلا کے چہرے ڈھکے ہوئے تھے اور عدالت کے احاطے اور اطراف میں پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی۔ ملزمان کی طرف سےسینئر وائس پریزیڈنٹ سپریم کورٹ بارغلام مرتضیٰ چوہدری عدالت میں پیش ہوئے، عدالت نے فریقین کے وکلا کا ابتدائی موقف سننے کے بعد ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا جب کہ عدالت نے زخمی وکلا کا میڈیکل کرانے کا حکم بھی دیا ہے۔

پی آئی سی حملے کے 2 مختلف مقدمات تھانہ شادمان میں درج کیے گئے ہیں جس میں ڈھائی سو وکلا کو نامزد کیا گیا ہے، دو الگ الگ مقدمات ڈاکٹر ثاقب شیخ اور ایس ایچ او شادمان انتخاب شاہ کی مدعیت میں تھانہ شادمان درج کیے گئے۔

مقدمات میں دہشت گردی کی دفعہ 7 اے ٹی اے سمیت سرکاری املاک کی توڑ پھوڑ، فائرنگ، پولیس وین جلانے، قتل، اقدام قتل، بلوہ، ہنگامہ آرائی اور کارِ سرکار میں مداخلت کی دفعات شامل کیے گئے ہیں، ایک مقدمے میں ڈاکٹرز، دوسرے میں پولیس مدعی ہے۔

ایف آئی آر کے مطابق ڈاکٹروں اور اسپتال عملے کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا، سرکاری کام میں مداخلت سے مریضوں کی جانیں ضایع ہوئیں، وکلا نے اسپتال میں کروڑوں روپے کی مشینری اور املاک کو نقصان پہنچایا، پولیس اہل کاروں پر تشدد کیا گیا، ہوائی فائرنگ کی گئی اور پولیس وین کو جلایا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں