The news is by your side.

Advertisement

یوم علیؓ : کراچی اور حیدرآباد میں ڈبل سواری پر پابندی عائد

کراچی / حیدرآباد: سندھ حکومت نے یوم علیؓ کے موقع پر سیکیورٹی خدشات کو مدنظر رکھتے ہوئے کراچی اور حیدرآباد میں  ڈبل سواری پر پابندی عائد کردی۔ پابندی کا اطلاق رات بارہ بجے سے ہوچکا ہے۔ رینجرزنے اسنیپ چیکنگ کا سلسلہ شروع کردیا۔

تفصیلات کے مطابق آج یوم علیؓ میں امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھنے کے لیے وزارتِ داخلہ سندھ نے آئی جی سندھ کی سفارش کے بعد کراچی اور حیدرآباد میں 17 جون بروز ہفتہ کو ڈبل سواری پر پابندی کا نوٹی فکیشن جاری کردیا۔

ڈبل سواری کی پابندی کا اطلاق 17 جون کی رات 12 بجے سے آئندہ چوبیس گھنٹوں کے لیے کیا جا چکا ہے،جبکہ بزرگ، خواتین، بچوں اور صحافیوں کو اس سے مستشنیٰ قرار دیا گیاہے، نوٹی فکیشن کے مطابق جلوس کی ڈرون کیمروں کے ذریعے کوریج  پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے۔

اس کے علاوہ کراچی میں یوم علیؓ کےجلوس کے راستوں پر رینجرز نے اسنیپ چیکنگ کا سلسلہ شروع کردیا ہے، رینجرز ملٹری فورس اور رینجرز کے جوانوں نے شہربھرمیں فلیگ مارچ کیا۔

رینجرزحکام کے مطابق رات بارہ بجے کے بعد سے جلوس کے راستوں کو کنٹینرزلگا کرسیل کیاجا رہا ہے، 122جلوسوں اور830 مجالس شہر بھر میں منعقد ہونگی، جس کی سیکیورٹی کیلئے ساڑھے 5ہزارسے زائداہلکار معمور ہونگے۔

دوسری جانب بلوچستان حکومت نے بھی صوبے میں امن و امان کی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے دفعہ 144 نافذ کردی، جس کے تحت اسلحے لے کر چلنے اور ڈبل سواری پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

علاوہ ازیں سندھ تاجر اتحاد نے یوم علیؓ جلوسوں کے راستوں پر آنے والی مارکیٹیں بند رکھنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ جلوس کے اختتام پر تمام کاروباری مراکز کھول دیے جائیں گے۔

یاد رہے گزشتہ روز ایڈیشنل آئی جی سندھ نے حکومت سے سفارش کی تھی کہ صوبے میں امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھنے اور سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر ڈبل سواری پر پابندی کے ساتھ موبائل فون سروس بھی بند رکھی جائے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں