The news is by your side.

Advertisement

خواجہ برادران کی درخواست ضمانت پرسماعت یکم اپریل تک ملتوی

لاہور: پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کی جانب سے اہم دستاویزات کوعدالتی فائل کا حصہ بنانے کی استدعا منظورکرلی گئی۔

تفصیلات کے مطابق پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کی درخواست ضمانت پر لاہور ہائی کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے سماعت کی۔

خواجہ برادران کی جانب سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ نیب نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی اسکینڈل میں گرفتارکیا، نیب کرپشن کے الزامات ثابت کرنے میں ناکام رہا۔

درخواست میں کہا گیا کہ نیب کی تفتیش میں مکمل تعاون کیا، تمام ریکارڈ فراہم کیا، عدالت ضمانت منظورکرتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دے۔

بعدازاں لاہور ہائی کورٹ نے پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کی درخواست ضمانت پر سماعت یکم اپریل تک ملتوی کردی

پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل: خواجہ برادران نے درخواست ضمانت دائر کردی

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کی جانب سے لاہور ہائی کورٹ میں درخواست ضمانت دائر کی گئی تھی۔

واضح رہے 11 دسمبر کو لاہور ہائی کورٹ نے مسلم لیگ ن کے رہنماؤں خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کی عبوری ضمانت خارج کردی تھی، جس کے بعد قومی احتساب بیورو (نیب) نے دونوں بھائیوں کو حراست میں لے لیا تھا۔

خواجہ برادران کو پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار کیا گیا ہے جبکہ دونوں بھائی پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل سمیت 3 مقدمات میں نیب کو مطلوب تھے۔

اس سے قبل آشیانہ ہاؤسنگ سوسائٹی کی تحقیقات میں انکشاف ہوا تھا کہ خواجہ سعد رفیق کے پیراگون سوسائٹی سے براہ راست روابط ہیں، پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی کے ذریعے آشیانہ اسکیم لانچ کی گئی تھی۔

نیب کے مطابق وفاقی وزیر ہوتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے اپنے اختیارات کا غلط استعمال کیا تھا اور شواہد کو ٹمپر کرنے کی کوشش بھی کی، دونوں بھائیوں نے اپنے ساتھیوں سے مل کر عوام کو دھوکہ دیا اور رقم بٹوری۔

نیب کا کہنا ہے کہ خواجہ برادران پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سے فوائد حاصل کرتے رہے، خواجہ برادران کے نام پیراگون میں 40 کنال اراضی موجود ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں