مسلم لیگ ن کو سپریم کورٹ کا فیصلہ ماننا پڑے گا‘ خورشید شاہ -
The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن کو سپریم کورٹ کا فیصلہ ماننا پڑے گا‘ خورشید شاہ

سکھر: قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ ایم کیوایم اور پی ٹی آئی میں اختلافات ختم ہونا خوش آئند ہوگا تاہم اپوزیشن لیڈر کے لیے کوئی نام سامنے نہیں آیا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی ،جماعت اسلامی اور دیگر جماعتوں سے رابطہ ہوا ہے،اپوزیشن لیڈر کےلیے سب نے کہا نام سوچ کربتائیں گے۔

اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کے انکار سے کچھ نہیں چلے گا انہیں سپریم کورٹ آف پاکستان کا فیصلہ ماننا پڑے گا۔

پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن اور دیگر سیاسی جماعتیں بھی اسمبلی کی مدت سے اتفاق کرتی ہیں،اسمبلی کی مدت 4 سال کے لیے آئندہ الیکشن کے بعد کے لیے ہوگی۔

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ سیاست میں کوئی دشمن یا دوست نہیں ہوتا،انہوں نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر لانا تحریک انصاف کا جمہوری حق ہے۔


نتائج کا اندازہ تھا لیکن پھربھی نظرثانی اپیل دائرکی‘خواجہ سعدرفیق


یاد رہے کہ گزشتہ روز وفاقی وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ نظرثانی اپیل کے ذریعے پاناما فیصلے پراصلاح چاہتےتھے۔


فاروق ستار کا شاہ محمود قریشی سے ٹیلی فونک رابطہ


واضح رہے کہ دو روزقبل ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی سے ٹیلی فونک رابطہ کیا تھا اور اپوزیشن لیڈر کی تبدیلی پر مشاورت سمیت ملک کی سیاسی صورت حال اور انتخابی اصلاحات پر بھی تبادلہ خیال کیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں