The news is by your side.

Advertisement

ملک میں جو کام کرتے ہیں انہیں ہی عدالتوں میں گھسیٹا جاتا ہے، وزیر اعظم

مظفر آباد: وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ سے آج بھی ایک فیصلہ آیا ہے، ، بدقسمتی سے جو ملک میں کام کرتے ہیں انہیں ہی عدالتوں میں گھسیٹا جاتا ہے، سیاست دان کی عزت نہیں ہوگی تو ملک میں ترقی مشکل ہے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مظفر آباد میں نیلم جہلم منصوبے کے یونٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا، شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ قومیں ان لوگوں کو یاد رکھتی ہیں جو ان کے مسائل حل کرتے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت سنبھالی تو ملک میں سنگین توانائی بحران کا سامنا کرنا پڑا، صرف باتیں نہیں کام کرکے دکھایا ہے، 5 سال کے ترقیاتی کام 65 سال پر حاوی ہیں، حکومت نے بجلی کی طلب و رسد میں فرق ختم کردیا ہے، لوڈشیڈنگ صرف ان علاقوں میں ہوتی ہے جہاں بجلی چوری ہورہی ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ کوشش ہے کہ بجلی سستی اور پورے ملک کے لیے ہو، ملک میں 10 ہزار 400 میگا واٹ بجلی کے منصوبے لگ چکے ہیں، چیئرمین واپڈا کی کاوشوں سے آج نیلم جلہم منصوبہ پایہ تکمیل تک پہنچا ہے، نیلم جہلم 969 میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت کا حامل ہے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبے سے قومی خزانے کو سالانہ 55 ارب روپے کی آمدن حاصل ہوگی، نیلم جلہم منصوبے سے 4500 افراد کو روزگار حاصل ہوگا، کسی سابق حکومت نے 2 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا نہیں کی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ کشمیر انسانی حقوق کا ایک مسئلہ ہے جو پوری دنیا کے لیے انسانی حقوق کا چیلنج ہے، ہم کشمیر کے مسئلے کو نہیں بھلا سکتے، ہم نے ہر سطح پر اس مسئلے کو اُٹھایا ہے، ہم کشمیری عوام کی سفارتی، سیاسی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں