The news is by your side.

Advertisement

ن لیگ اتفاق رائے سے نئے صوبے بنانے کے حق میں ہے: وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی

بہاولپور: سیاسی فیصلےعدالتیں نہیں، عوام کرتے ہیں، ہم عدالتی فیصلوں کا احترام کرتے ہیں، مگر انصاف ہوتا بھی نظر آنا چاہیے۔

ان خیالات کا اظہار وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے بہاولپور میں عمائدین اور ن لیگی کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انھوں نے کہا کہ سیاسی فیصلے عوام کو کردیں۔

ایم پی ایز بیچنے اور خریدنے والوں نے مل کر چیئرمین سینیٹ بنایا، جولائی میں عوام فیصلہ کریں گے کہ گالم گلوچ کی سیاست چاہیے یاحق اورسچ کی

وزیرا عظم شاہد خاقان عباسی

ان کا کہنا تھا کہ ووٹ خریدنےاور بیچنےوالےملک کو کیاعزت دیں گے، جس پارٹی کا کوئی ایم پی اے نہ ہو، اس کا چیئرمین سینیٹ کیسے بن سکتا ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ایم پی ایز بیچنے اور خریدنے والوں نے مل کر چیئرمین سینیٹ بنایا، جولائی میں عوام فیصلہ کریں گے کہ گالم گلوچ کی سیاست چاہیے یاحق اورسچ کی۔

انھوں نے کہا کہ کراچی کا امن ن لیگ کی حکومت نے بحال کیا، مشرف کے پاؤں میں بیٹھنے والے نئے صوبے کی بات کر رہے ہیں، ن لیگ اتفاق رائے سے نئے صوبے بنانے کے حق میں ہے، کام نہ کرنے پرعوام نے 2013 میں پی پی کوگھربھیج دیا تھا۔

وزیراعظم نے کہا کہ پی پی اپنے 5 سال دورمیں ایک منصوبہ بھی مکمل نہ کرسکی، جو کام نہیں کرتا، اسے کوئی پوچھنے والا ہی نہیں ہے، لوگوں پر450 ارب کرپشن کےالزام لگے لیکن 10سال تک فیصلہ نہ ہوا۔


سیاست کے فیصلے عدالتوں میں ہونا اچھی روایت نہیں: وزیر اعظم


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں