The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف کیخلاف مقدمے پر وزیراعظم نے ناپسندیدگی کا اظہار کیا، فواد چوہدری

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ وزیراعظم کونوازشریف اور دیگرلوگوں پرایف آئی آرکاعلم نہیں تھا، علم ہونے پر وزیراعظم نےایف آئی آرپرناپسندیدگی کااظہارکیا، ہو سکتا ہےکسی نےکاروائی ڈالنےکیلئےایسا کیا ہو ۔

ٹوئٹر پر جاری بیان میں فواد چوہدری نے لکھا کہ بغاوت کےمقدمےبناناہمارےنہیں نوازشریف دورکی باتیں ہیں، پی ٹی آئی سیاسی جماعت ہے، سیاست کی شطرنج پرہماری چال باقی ہے، ن لیگ پیادےبچائےشاہ اوروزیرکاکھیل ابھی دور ہے، ابھی توکھیل شروع ہواہےجلدی کیاہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ نوازشریف کابیانیہ بھارتی بیانیےکےبہت قریب ہے، بھارتی پاکستان مخالف تجزیےنوازشریف کی گفتگومیں فرق نہیں، نوازشریف کے بیانیے کیساتھ اسی لیے ن لیگی کارکنان نہیں کھڑے، پی ڈی ایم کےجلسےتاخیرکاشکارہوئےمزیدبھی تاخیرہوگی۔

فوادچوہدری نے کہا کہ نوازشریف کوشکوہ یہ ہےکہ پیسےچھپانےمیں فوج نےمددنہیں کی، حدیبیہ کیس کرپشن کی مشہورکہانی ہے، حدیبیہ اسکینڈل بتاتاہےکس طرح منی لانڈرنگ کاآغازہوا، ماضی میں یہ لوگ این آراولیتےآئےہیں اس لیےبچتےرہےہیں اس مرتبہ عمران خان کی حکومت نےاین آراونہیں دیا۔

دوسری جانب معاون خصوصی شہباز گل نے ٹوئٹر پر لکھا کہ ہماری حکومت سیاسی لوگوں پر غداری کے مقدمے بنانے کہ حق میں نہیں ہے۔ یہ کام ن لیگ کیا کرتی تھی اور ہم اس پر اعتراض کرتے تھے۔ اس ایف آئی آر میں غداری کی کوئی دفعہ شامل نہیں ہے۔ اس میں sedition کی دفعات شامل ہیں۔ جو غداری کا جرم نہیں۔sedition کی definition لف کر رہا ہوں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں