The news is by your side.

Advertisement

300 سے کم یونٹس استعمال کرنے والے صارفین کیلئے بڑی خبر

وزیراعظم نے آئی ایم ایف سےاسٹاف لیول معاہدے کی کامیابی پر اظہاراطمینان کردیا

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں بتایا گیا کہ 300 سےکم یونٹس استعمال پرصارفین کو162ارب کی سبسڈی دی گئی، جس پر عمران خان نے کہا ہے کہ سبسڈی، مالی سپورٹ کا مقصد کمزور طبقے کو ریلیف فراہم کرناہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس ہوا ، جس میں عوامی ریلیف کے لئے دی جانے والی سبسڈی کےاثرات کا جائزہ لیا گیا اور حکومت کی جانب سے فراہم رقم کی مکمل تفصیلات پیش کی گئیں۔

بریفنگ میں بتایا گیا سبسڈی کا مقصد کمزور اور کم آمدنی والے طبقے کو ریلیف پہنچانا ہے، توانائی شعبے میں 251 ارب روپےکی سبسڈی فراہم کی جا رہی ہے اور 300 سےکم یونٹس استعمال پرصارفین کو162ارب کی سبسڈی دی گئی جبکہ بلوچستان میں زرعی ٹیوب ویلزکیلئےساڑھے 8ارب روپے سبسڈی دی۔

بریفنگ میں کہا گیا انضمام شدہ علاقوں کےعوام کیلئے18 ارب روپے ، آزاد کشمیر،کےالیکٹرک کیلئے3ارب اور 25ارب روپےفراہم کئےجا رہے ہیں جبکہ صنعتی شعبےکومناسب قیمت پربجلی کی فراہمی کیلئے10ارب روپے دئیےگئے ہیں۔

بریفنگ میں بتایا گیا گیس کی فراہمی کی مدمیں 24 ارب روپے ، اسٹریٹیجک ذخائر کو یقینی بنانے کے لئے 5 ارب روپے ، یوٹیلیٹی اسٹورز پر رمضان پیکیج کے لئے ڈھائی ارب روپے سبسڈی اور پرائم منسٹر ریلیف پیکیج کی مد میں 21 ارب روپے سبسڈی دی گئی ہے۔

گلگت بلتستان کے لئے گندم پیکج کی مد میں 6ارب روپے اور سماجی تحفظ کے احساس پروگرام کے تحت 192 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں ، اجلاس میں برآمدات میں اضافے ،ریلوے شعبے میں فراہم کردہ رقوم کی تفصیلات بھی پیش کی گئیں۔

اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ سبسڈی،مالی سپورٹ کامقصدکمزورطبقےکوریلیف فراہم کرناہے، یقینی بنایاجائے یہ رقم متعلقہ افراد اور مقصدکےلئےفائدہ مندثابت ہو اور سبسڈی کےاثرات کےجائزے کی اہمیت پر زور دیا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ کرپشن، غفلت، انتظامی بد عنوانی کا بوجھ عوام پرڈالنےکی اجازت نہیں اور آئی ایم ایف سے اسٹاف لیول معاہدے کی کامیابی پر اظہاراطمینان کرتے ہوئے کہا رواں مالی سال عوام کو منی بجٹ سے محفوظ رکھناحکومتی کامیابی ہے، معاہدہ حکومت کی معاشی پالیسیوں اوران کی سمت پراعتمادکامظہرہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں