The news is by your side.

Advertisement

وزیر اعظم نے حکومتی، اتحادی اراکین کو عشائیے پر مدعو کر لیا

اختر مینگل کی عشائیے میں شرکت سے معذرت، کرونا سے صحت یاب شیخ رشید بھی شرکت نہیں کر سکیں گے

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے آج حکومتی اور اتحادی اراکین کو عشائیے پر مدعو کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے بجٹ منظوری کے لیے تمام اراکین کو ایوان میں حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے،آج حکومتی اور اتحادی اراکین کو عشائیے پر بھی مدعو کر لیا گیا ہے۔

ذرایع نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی کے چیف وہپ عامر ڈوگر سے کہا کہ حکومتی وزرا اور اتحادی اراکین کی ایوان میں حاضری یقینی بنائی جائے، وزیر اعظم نے بجٹ منظوری سمیت ملکی معاملات پر مشاورت کے لیے حکومتی اور اتحادی اراکین کو عشائیے پر بھی بلایا۔

عشائیے کا اہتمام وزیر اعظم ہاؤس میں کیا گیا ہے، وزیر اعظم ارکان اسمبلی سے ملاقات کریں گے اور اتحادی جماعتوں کے تحفظات بھی سنیں گے۔ یہ عشائیہ وزیر اعظم اور اتحادیوں کے درمیان خوش گوار ماحول میں ملاقات کا اہم موقع ہوگا، اور وزیراعظم کے اتحادیوں کے ساتھ تعلقات کو بہتر کرنے کی جانب اہم قدم ہے۔

بڑی سیاسی پیش رفت، عمران خان نے اہم ہدایات جاری کر دیں

ذرایع کا کہنا ہے کہ عشائیے کے لیے روایتی طریقہ کار نہیں اپنایا جائے گا، ماضی میں کیے گئے روایتی عشائیوں جیسا پُر تکلف اہتمام نہیں ہوگا، وَن ڈِش پالیسی پر عمل درآمد لازمی قرار دیا گیا ہے، وزیر اعظم نے ہدایت کی ہے کہ کفایت شعاری مہم پر بھی مکمل عمل درآمد کیا جائے۔

ذرایع کا یہ بھی کہنا ہے کہ بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی) کے سربراہ اختر مینگل نے مطالبات کی عدم منظوری اور حکومت سے علیحدگی کے باعث عشائیے میں شرکت سے معذرت کر لی ہے۔ حکومت کے اہم اتحادی اور کرونا وائرس انفیکشن سے حال ہی میں صحت یاب ہونے والے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد آرام کی غرض سے عشائیے میں شرکت نہیں کر سکیں گے۔

دوسری جانب وزیر اعظم عمران خان نے بی این پی کی حکومت سے علیحدگی کے بعد واپس حکومت میں لانے کی کوششیں تیز کرتے ہوئے 6 نکاتی معاہدے پر عمل درآمد کا آغاز کر دیا ہے۔

وزیر اعظم آفس کی جانب سے تمام وزارتوں کو لکھے گئے ایک خط میں کہا گیا ہے کہ بلوچستان کے لیے ملازمتوں کے 6 فی صد کوٹے پر عمل درآمد یقینی بنایا جائے اور اس سلسلے میں خالی آسامیوں کی فہرست 30 دن میں وزیر اعظم کو پیش کی جائے تا کہ 6 فی صد کوٹے کے مطالبے پر عمل درآمد شروع کیا جا سکے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں