The news is by your side.

Advertisement

ہماری فوج بالکل تیار ہے، بھارت سےکہتا ہوں کچھ بھی کیا توجوابی کارروائی ہوگی، وزیراعظم

تھرپارکر : وزیراعظم عمران خان نے کہا کوئی یہ سوچ رہا ہےکہ ہمیں غلام بنالےگا تویہ کان کھول کرسن لے، میں اور میری قوم میچ کی آخری با ل تک کھیل کوجنگ کی طرح لڑےگی، ہماری فوج بالکل تیار ہے، بھارت سے کہتا ہوں کچھ بھی کیا تو جوابی کارروائی ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے چھاچھرو میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا الیکشن کے بعد پاکستان میں پہلا جلسہ چھاچھرو میں کر رہا ہوں، الیکشن نہیں ہورہے اس کے باوجود یہاں جلسہ کر رہا ہوں، چھاچھرو میں جلسہ کیوں کررہاہوں اس کی ایک وجہ ہے کیونکہ چھاچھرو پاکستان کاسب سے پسماندہ علاقہ ہے اور تھرپارکر کے لوگ غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزار رہے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اقتدار میں آنے کا مقصد پاکستان میں لوگوں کو غربت سے نکالنےکی کوشش ہے، اٹھارویں ترمیم کے بعد تقریباً سارے اختیارات صوبوں کے پاس ہیں لیکن ہیلتھ انشورنس کا اختیار وفاقی حکومت کے پاس ہے۔

اٹھارویں ترمیم کے بعد تقریباً سارے اختیارات صوبوں کے پاس ہیں لیکن ہیلتھ انشورنس کا اختیار وفاقی حکومت کے پاس ہے

عمران خان نے کہا تھرپارکرمیں ایک لاکھ12 ہزار گھرانوں کو ہیلتھ انشورنس کارڈ ملیں گے، کوشش کریں گے سارے تھرپارکر کے لوگوں کو ہیلتھ کارڈ پہنچائیں، تھرپارکر میں موبائل اسپتال شروع کریں گے اور 2 بڑی گاڑیاں ہوں گی، پورے تھرپارکر میں موبائل اسپتال کی گاڑیاں چلیں گی جبکہ 4 ایمبولینس بھی فراہم کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ تھرپارکر میں کالا سونا رکھا ہوا ہے یعنی کوئلہ موجود ہے، ہمارا فیصلہ پسماندہ علاقوں سے جو بھی معدنیات نکلےگی پہلاحق علاقے کا ہوگا، ہم نے فیصلہ کیا ہے پاکستان کی انشا اللہ تمام پالیسیاں تبدیل کریں گے، ہم کوشش کریں گے سب سے پہلے پسماندہ علاقوں میں ترقی کریں گے۔

وزیراعظم کا تھرپارکر میں 100آراوپلانٹ فوری لگانےکااعلان

وزیراعظم نے تھرپارکر میں 100 آر او پلانٹ فوری لگانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا اس کے بعد بھی اگر ضرورت ہوئی تو مزید آر او پلانٹس لگائیں گے، آر او پلانٹس بھی سولر پر چلائیں گے اور لوگوں کو بھی بجلی ملےگی۔

عمران خان نے کہا سب سے پہلے تھرپارکر پر توجہ دیں گے کیونکہ آپ لوگ پیچھے رہ گئے ہیں، تھرپارکر میں تقریباً آدھی آبادی ہندو مذہب کے ماننے والوں کی ہے، بھارت میں مسلمانوں، سکھوں، عیسائیوں پر ظلم کیا جارہا ہے، اقلیتوں کو تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے، ہماری حکومت پاکستان میں تمام اقلیتوں کیساتھ کھڑی ہے۔

قائداعظم نےمحسوس کیاایک وقت آئےگاجب مسلمانوں کوحقوق نہیں ملیں گے، اسی لیےپاکستان کیلئےالگ راستےپرچل پڑےتھے

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں ہندوسمیت کسی بھی اقلیت پر ظلم نہیں ہونے دیں گے، میرے لیڈر قائداعظم انسانوں کو تقسیم نہیں کرنا چاہتے تھے، قائداعظم نے محسوس کیا ایک وقت آئےگا جب مسلمانوں کوحقوق نہیں ملیں گے، اسی لیے پاکستان کیلئے الگ راستے پر چل پڑے تھے۔

وزیراعظم نے کہا آج بھارت میں وہی ہورہا ہے، جو قائداعظم نے محسوس کیا تھا، آج بھارت میں اقلیتوں پر تشدد اور انہیں انسان نہیں سمجھا جارہا، لوگوں کو تقسیم کرکے الیکشن نہیں جیتے جاسکتے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ایک آدمی نے کراچی میں لوگوں کوتقسیم کرکے حکومت کی، ایک شخص نے کراچی میں نفرت کی سیاست کو ہوا دی، اپنے ہی اقتدار کیلئے لوگوں میں نفرتیں پھیلائی گئیں، نفرتیں نہ پھیلائی جاتیں تو آج کراچی دبئی سےبھی آگے ہوتا، کبھی پختون اور کبھی بلوچ کے نام پرسیاست کی گئی، کبھی جاگ پنجابی جاگ ، پکڑے جانے کا خوف ہو تو سندھ کارڈ استعمال کیا جاتا ہے۔

انھوں نے کہا مودی نے بھی یہی طریقہ اپنا کر مسلمانوں اورہندوؤں میں نفرتیں بڑھائیں اور بھارت میں پاکستان کےخلاف نفرت کوہوا دی، کہاں مہاتماگاندھی جنہوں نے مسلمانوں کیلئے بھوک ہڑتالیں کیں، آج مودی الیکشن کیلئے نفرتوں کو ہوا دے کر ووٹ بٹورنا چاہتا ہے۔

کسی کوغلط فہمی میں نہیں رہناچاہیے،اپنےدفاع سےغافل نہیں

وزیراعظم کا کہنا تھا ہم مسلمان انسانوں کو تقسیم نہیں کرتے، نفرتیں نہیں پھیلاتے، بھارت کو پائلٹ واپس کیا اور کہا جنگ نہیں چاہتے، بھارت کو کہا آپ ٹھوس شواہد دیں ہم کارروائی کریں گے، کسی کو غلط فہمی میں نہیں رہنا چاہیے، اپنے دفاع سے غافل نہیں، یہ نیا پاکستان ہے، غربت کے خاتمے کیلئے جنگ کریں گے۔

عمران خان نے کہا مودی کو کہا تھا ہمارے خطے میں غربت سب سے زیادہ ہے، مل کر خطے کی ترقی اور غربت کے خاتمے کے لئے کام کرتے ہیں ، مجھے کیا معلوم تھا جیسے ہی الیکشن قریب آئےگا مودی جنگی جنون میں مبتلا ہوگا، پاکستان کے لئے ہم آخری سانس تک لڑنے کیلئے تیار ہیں۔

ہماراہیرواورلیڈرٹیپوسلطان ہے

ان کا کہنا تھا کہ بہادرشاہ ظفر نے غلامی مان لی تھی، ہمارا ہیرو اور لیڈر ٹیپو سلطان ہے، ٹیپو سلطان نے فیصلہ کیا تھا غلامی سے بہتر موت ہے، کوئی یہ سوچ رہا ہے کہ ہمیں غلام بنالےگا تو یہ کان کھول کر سن لے، میں اور میری قوم میچ کی آخری بول تک کھیل کو جنگ کی طرح لڑےگی، ہماری فوج بالکل تیار ہے، بھارت سے کہتا ہوں کچھ بھی کیا تو جوابی کارروائی ہوگی۔

نیشنل ایکشن پلان کے حوالے سے وزیراعظم نے کہا نیشنل ایکشن پلان پر تمام سیاسی جماعتوں نے دستخط کیے ہیں، بدقسمتی سے نیپ پر پہلے زیادہ کام نہیں ہوا، ہماری حکومت نے فیصلہ کیا ہے نیپ پر مکمل عملدرآمد ہوگا ، حکومت اجازت نہیں دے گی پاک سرزمین دہشت گردی کیلئے استعمال کی جائے۔

جب تک عالمی کمیونٹی کاحصہ ہیں کسی مسلح تنظیم کوملک میں نہیں رہنےدیں گے

عمران خان کا کہنا تھا کہ جب تک عالمی کمیونٹی کا حصہ ہیں کسی مسلح تنظیم کوملک میں نہیں رہنے دیں گے، کراچی میں الیکشن مہم چلائی، اللہ کا شکر ہے وہاں انقلابی تبدیلی آئی، اندرون سندھ میں موقع نہیں ملا لیکن اب پی ٹی آئی اندرون سندھ بھی جائےگی۔

انھوں نے کہا نئےلوگوں کودعوت دیتاہوں ہمارے ساتھ چلیں ، نیا دور آنے والا ہے، 10 سال میں سندھ میں 5ہزار 300 ارب روپے خرچ ہوا، یہ پیسہ کہاں گیا، سندھ کے عوام بہت اچھی طرح جانتے ہیں۔

بلاول بھٹو کی تقریر سے متعلق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شخص زرداری کا نام بدل کر بھٹو رکھ کے خود ساختہ لیڈر بن گیا، بلاول نے اسمبلی میں جو تقریرکی وہ کسی کو سمجھ ہی نہیں آئی، بلاول یوٹرن اچھی چیز ہے مشکل وقت سے بچاتی ہے، ن لیگ اور ایم ایم اے والے تو اتنےگھبرا گئے کہ غلط سمت میں نماز پڑھ دی۔

زرداری نےاین آراوکےذریعے6کروڑڈالرسوئس بینکوں سےواپس حاصل کیے

عمران خان نے کہا یوٹرن کا مطلب سمجھتے تو اتنی مشکل میں نہیں آتے، پرویز مشرف نے امریکا کے دباؤ میں آکر آپ کے والد کو این آر او دے دیا، اگر اس وقت آپ کرپشن سے یوٹرن لیتے تو آج عدالتوں کے چکر نہ کاٹ رہے ہوتے۔

ان کا کہنا تھا کہ این آر او ملا تھا تو اس وقت کرپشن سے یوٹرن لیتے، آج آپ کو والد نے پھنسا دیا ہے کیونکہ آپ کا بھی نام آگیا ہے، آپ کے والد نے کرپشن پر یوٹرن نہیں لیا آج آپ کا بھی جعلی اکاؤنٹ میں نام آگیا، زرداری نے این آراو کے ذریعے 6کروڑ ڈالر سوئس بینکوں سے واپس حاصل کیے۔

نئے پاکستان میں سب سےپہلےپسماندہ علاقوں پرپیسہ خرچ کیاجائے گا پھر میٹرو جیسے مہنگےمنصوبےہوں گے

وزیراعظم نے کہا آج پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ہےسب سے پہلے پسماندہ علاقوں پر توجہ ہوگی، سب سےپہلےپسماندہ علاقوں پرپیسہ خرچ کیاجائے گا پھر میٹرو جیسے مہنگے منصوبے ہوں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں