ملکی تاریخ میں پہلی بارغربت میں کمی کا پروگرام لارہے ہیں، وزیراعظم عمران خان
The news is by your side.

Advertisement

ملکی تاریخ میں پہلی بارغربت میں کمی کا پروگرام لارہے ہیں، وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم عمران خان نےصحت انصاف کارڈکےپہلےمرحلےکاآغازکردیا

اسلام آباد :وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ صحت کارڈ کے اجرا کا مقصد بھی غربت میں کمی ہے، ہماری ہرپالیسی کامحورغربت ختم کرنا ہوگا چاہے جو بھی پالیسی ہو، ملکی تاریخ میں پہلی بارغربت میں کمی کا پروگرام لارہےہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے صحت انصاف کارڈکے پہلے مرحلے کا آغاز کردیا اور مستحقین میں صحت انصاف کارڈ تقسیم کئے گئے ، پہلےمرحلےمیں اسلام آباد کے85 ہزار مستحقین میں کارڈ تقسیم کیے جائیں گے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا صحت کارڈ سے پسماندہ طبقے کا 7 لاکھ 20 ہزار تک مفت علاج ہوگا، کے پی میں آدھے سے زائد غریب گھرانوں کو کارڈ دیے، ایک غریب مشکل سےگھر کا خرچ پورا کرتا ہے، صرف علاج کی وجہ سے بہت سے لوگ غربت میں چلے جاتے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ خاندان کےکسی فردکوکینسرمیں دیکھناکسی اذیت سےکم نہیں ہوتاتھا، غریب افراد کے لئےعلاج معالجہ بہت مشکل ہوتا ہے، لوگ  اپنے پیاروں کے علاج کے لیے اپنی جمع پونجی لگا دیتے تھے، ایک سہولت موجود ہے کہ کارڈ ہے میں جاؤں گاعلاج ہوگا۔

ہماری ہرپالیسی کامحورغربت ختم کرناہوگاچاہےجوبھی پالیسی ہو

عمران خان نے کہا میں اپنوں کی تکلیف اور درد اچھی طرح سمجھتا ہوں، جب میری والدہ کوکینسرہواتواسپتال نہیں تھاباہرلیناجاناپڑا، کچھ لوگوں کے پاس تو علاج کے لیے پیسےہی نہیں ہوتے، ہماری ہرپالیسی کامحورغربت ختم کرناہوگاچاہےجوبھی پالیسی ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ قبائلی اضلاع میں پہلےصحت کارڈ دیں گےتاکہ انہیں علاج کی سہولت پہلےملے، عوام کو آج کل مشکلات کاسامناکرناپڑرہاہے، روپے کی قیمت 35 فیصدگری تومہنگائی تو آنا تھی، مشکل وقت آناتھا۔

ہمیں احساس ہے مشکل میں گھرے طبقے کیلئے آسانی پیدا کرناچاہتے ہیں

وزیراعظم نے کہا گیس اوربجلی کی قیمت بڑھ گئی ہے،کوشش ہے غریبوں کے لیے آسانی کریں، ہمیں احساس ہےکہ لوگ مشکل سےگزررہےہیں، مشکل میں گھرے طبقے کیلئے آسانی پیدا کرناچاہتے ہیں۔

ملکی تاریخ میں پہلی بارغربت میں کمی کا پروگرام لارہےہیں

عمران خان خان کا کہنا تھا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بارغربت میں کمی کا پروگرام لارہےہیں، بیت المال سمیت تمام اداروں کوایک چھتری تلے لے کرآئیں گے،  کوئی معاشرہ ترقی نہیں کرتاجب تک وہ اپنےلوگوں پرپیسہ خرچ نہ کرے۔

انھوں نے کہا بھارت ہم سےپیچھےتھاوہ ہم سےآگےنکل گیا، بنگلادیش بھی ہم سے پیچھے تھا وہ بھی آگے نکل گیا، جیسےجیسےوقت گزرےگا سرمایہ کار آئیں گے، ایک رپورٹ کے مطابق سیاحت کی مدمیں 40 فیصدترقی کی گنجائش ہے۔

ہماراہدف ہےکہ پاکستان کوفلاحی ریاست بناناہے

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہماراہدف ہے کہ پاکستان کو فلاحی ریاست بناناہے، جو غریب وکیل نہیں کرسکتا اسے بھی وکیل کی سہولت دینا چاہتے ہیں، صحت کارڈ کے اجرا کا مقصد بھی غربت میں کمی ہے، پاکستان میں صرف سیاحت سے40 ارب ڈالر کمائے جاسکتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں