The news is by your side.

Advertisement

ایک سال میں جتنا ٹیکس اکٹھا کیا اس کا آدھا سود میں چلا گیا: وزیر اعظم

صنعت کے فروغ کے لیے گوجرانوالہ، گجرات اور سیالکوٹ کا گولڈن ٹرائی اینگل بنا رہے ہیں

گوجرانوالہ: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پچھلے ایک سال میں جتنا ٹیکس اکٹھا کیا گیا ہے اس کا آدھا قرضوں کے سود میں چلا گیا، ملک اس طرح نہیں چل سکتا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان گوجرانوالہ چیمبر آف کامرس کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے، انھوں نے کہا کہ قرضوں کے سود پر ٹیکس کا پیسا چلا جائے تو ملک نہیں چل پاتا، 70 فی صد ٹیکس صرف 300 کمپنیاں دیتی ہیں، پاکستان کو جس طرح چلایا جا رہا تھا اب ویسے نہیں چلے گا۔

انھوں نے کہا کہ آپ آج کا دن یاد رکھیں گے کہ ہم نے خود کو کس طرح بدلا، ہم نے کوشش کی ہے کہ سب ٹیکس نیٹ میں آ جائیں، لیکن ڈیمانڈ آ رہی ہے کہ ہم سے پیسے لے لیں اور ٹیکس نیٹ میں نہ ڈالیں۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ لوگوں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لیے خصوصی ایپلی کیشن تیار کریں گے، اس سلسلے میں آسانیاں پیدا کر رہے ہیں، سابق وزیر خزانہ نے خود کہا ایف بی آر میں 700 ارب کی چوری ہوتی ہے، 22 کروڑ میں سے صرف 15 لاکھ لوگ ٹیکس دیتے ہیں، یہ سب تھوڑا ٹیکس بھی دیں تو قرضوں کے دلدل سے نکل سکتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ اسمگلنگ کے خلاف پوری طاقت کے ساتھ کریک ڈاؤن کر رہے ہیں، اس کی روک تھام کے لیے جنرل باجوہ سے بھی بات کی ہے، افغانستان سے اسمگلنگ ہو رہی ہے، افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کی آڑ میں اسمگلنگ پر بھی افغانستان سے بات کر رہے ہیں، اسمگلنگ کو نہ روکا تو یہ انڈسٹری آگے نہیں بڑھ سکتی۔

انھوں نے کہا کہ چھوٹی انڈسٹریز کو فروغ دینے کے لیے گوجرانوالہ، گجرات اور سیالکوٹ کا گولڈن ٹرائی اینگل بنا رہے ہیں، قوم کی ریڑھ کی ہڈی درمیانی اور چھوٹی انڈسٹریاں ہوتی ہیں، لیکن یہاں پیسے والا صنعت کار تو پیسے دے کر اپنا کام نکلوا لیتا ہے، چھوٹے کاروبار کرنے والے جگہ جگہ رشوت دینے پر مجبور ہوتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں