The news is by your side.

Advertisement

عوام پر واضح کیا جائے کہ 208 ارب کا ٹیکس کیوں معاف کیا گیا: وزیر اعظم

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے بڑے صنعت کاروں کو ٹیکس معاف کرنے کا نوٹس لے لیا.

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا، جس میں بڑے صنعت کاروں کو ٹیکس معاف کرنے کا معاملہ بھی زیر بحث آیا.

وزیراعظم نے جی آئی ڈی سی کی مد میں ٹیکس معاف کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے عمرایوب اور ندیم بابرسے تفصیلات طلب کیں.

وزیراعظم نے اس ضمن میں میڈیا پر چلنے والی خبروں پر وضاحت مانگ لی اور کہا کہ ٹیکس معافی سےمتعلق ابہام کودورکیا جائے، عوام کو واضح اندازمیں بتایا جائے کہ ٹیکس کیوں معاف کیا گیا.

کابینہ کے اجلاس میں 7 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا، بھارت کے لئے فضائی حدود کے استعمال کا معاملہ زیر بحث آیا. ارکان نے کمپنیز کو 208 ارب روپے معاف کرنے پرسوالات اٹھائے، گیس انفراسٹرکچر سرچارج کی مد میں 208 ارب روپے معاف کرنے پربحث ہوئی، حکومتی معاشی ٹیم نے کابینہ ارکان کو معاملے پر تفصیلی بریفنگ دی.

مزید پڑھیں: وزیراعظم کا سعودی ولی عہد سے رابطہ ، کشمیرکی تازہ صورتحال سے آگاہ کردیا

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ گیس انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ سرچارج کے حقائق بتانا ضروری ہیں، قومی خزانے کی حفاظت کی ذمہ داری ہے، کسی کو نوازا نہیں جائے گا.

وفاقی کابینہ نے اسلامی کیلنڈر کا معاملہ وزارت مذہبی امور کو بھجوا دیا، وزارت مذہبی اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد رپورٹ پیش کرے گی، کابینہ نے تعلیمی اداروں کے ملازمین کی مستقلی پر کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے.

کمیٹی دیگر اداروں میں ڈیلی ویجز ملازمین سے متعلق بھی فیصلہ کرے گی، کابینہ نے کمیٹی برائے سی پیک کے فیصلوں کی بھی توثیق کردی.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں