The news is by your side.

Advertisement

مودی کی غلطی سے کشمیریوں کو آزادی کا تاریخی موقع مل گیا: وزیراعظم

مسئلہ کشمیر ایٹمی جنگ کی طرف چلا گیا، تو اثرات پوری دنیا پر پڑیں گے

اسلام آباد: وزیر  اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آخری سانس تک کشمیریوں کا ساتھ دیں گے۔

اپنے اس اہم خطاب میں وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان کا ’’کشمیرپالیسی‘‘پرفیصلےکاوقت آگیاہے،  آج ساری قوم کو اعتمادمیں لینےکاوقت ہے۔

انھوں نے کہا کہ ہم مذاکرات کی بات کرتےہیں، بھارت کوئی اوربات شروع کردیتاہے،  اگر آج ہمارےساتھ کوئی نہیں کھڑا، تو مایوس ہونےکی ضرورت نہیں،  جو آج ہمارےساتھ نہیں ہیں، وہ کل ہمارےساتھ ہوں گے،  پاکستا ن کشمیر کے لیےہر حد اور ہر سطح  تک جائےگا۔  اس جمعے سے ہر ہفتے آدھا گھنٹہ کشمیری بھائیوں کے نام کریں گے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ اقوام متحدہ محسوس کرے، مسئلہ ایٹمی جنگ کی طرف چلاگیا، تو جیت کسی کی نہیں ہوگی،  ایٹمی جنگ کے اثرات پوری دنیا پر پڑیں گے،   سوا ارب مسلمان اقوام متحدہ کی طرف دیکھ رہےہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت میں آنےکے بعد پہلی کوشش ملک میں امن کا قیام تھا، پاکستان اوربھارت کےمسائل مشترکہ ہیں،  ہماری کوشش تھی سب کےساتھ اچھےاوردوستانہ تعلقات ہوں۔

افغان عمل کے لئے بھرپورکوشش کی اور مثبت پیش رفت ہوئی، بھارت سےکہا آپ ایک قدم آگے بڑھیں گے ہم دو بڑھیں گے،  بھارت کو پیش کش کی کہ مسئلہ کشمیر مذاکرات سے حل ہو گا،  مذاکرات کی بات کرتے ہیں، بھارت کوئی اوربات کرتا ہے،  بھارت پاکستان پر دہشت گردی کے الزامات لگانے کے بہانےڈھونڈتا رہا، بی جے پی نے انتخابات کےدوران پاکستان مخالف مہم چلائی۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ بھارت نے پلوامہ واقعےکا الزام  بھی پاکستان پر لگایا، بھارت نے پاکستان کو بینک کرپٹ کرنےکی پوری کوشش کی، ہم پرامن قوم ہیں، اپنے مسائل سیاسی طریقےسے حل کرتے ہیں،  ایف اےٹی ایف پربھارتی کوشش سےلگا، یہ کسی اور ایجنڈے پر ہیں، 5 اگست کے بعد کشمیر میں اضافی فوج بھجوا کر کشمیرکو بھارت کاحصہ بنانےکی کوشش کی، بھارت نے اپنے قوانین کی بھی خلاف ورزی کی، 5 اگست کوپیغام دیاگیا کہ بھارت صرف ہندوؤں کا ہے۔

آرایس ایس نظریہ یہ ہےکہ بھارت میں ہندوراج کاوقت آگیاہے، آر ایس ایس کا نظریہ لوگوں کوقتل عام پر اکساتا ہے،  آرایس ایس کانظریہ مسلمانوں سےنفرت کرناہے، ہمارانظریہ قرآن پاک اور حضرت محمدﷺکی سُنت سےمتاثرہے، آر ایس ایس کان ظریہ اقلیتوں کے ساتھ ظلم وستم کر تا ہے، اسلام اقلیتوں کو بے مثال تحفظ دیتاہے .مودی نے تکبر میں آ کر غلطی کی، جس کے باعث کشمیریوں کوآزادی لینےکاتاریخی موقع مل گیا۔

انھوں نے کہا کہ میں دنیا میں کشمیر کا سفیر بنوں گا، دنیاکے ہر فورم پربتاؤں گا کہ مقبوضہ کشمیر میں کیاہو رہا ہے، 80 لاکھ کشمیریوں کو پیغام دینا چاہتے ہیں ہم اُ ن کے ساتھ کھڑے ہیں، ہم مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کے ساتھ کھڑے ہیں، 27 ستمبر کو  اقوام متحدہ میں اپنا موقف بیان کروں گا۔

یاد رہے کہ آج یرس میں بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نے امریکی صدر سے ملاقات میں مسئلہ کشمیرکو پاک بھارت کا باہمی معاملہ قرار دیتے ہوئے کہا، نہیں چاہیں گےکہ کوئی ملک اس میں مداخلت کرے، جس پر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ مسئلہ اگر باہمی ہوتا تو پہلے ہی حل ہوجانا چاہیےتھا، میں مسئلہ کشمیر کے حل کے لئےموجود رہوں گا۔

مزید پڑھیں: مسئلہ کشمیر : ٹرمپ نے بھارتی وزیراعظم مودی کا مؤقف تسلیم کرنے سے انکار کردیا

خیال رہے کہ مودی سرکار نے غیر قانونی قدم اٹھاتے ہوئے مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 370 ختم کر دیا تھا، کشمیروں کے ردعمل سے خوف زدہ بھارت نے کشمیر میں کرفیو نافذ کر دیا اور کشمیر کو جیل میں تبدیل کر دیا.

اس عمل پر پاکستان کی جانب سے شدید ردعمل آیا. وزیر اعظم عمران خان نے مسلم ممالک کے سربراہان سے رابطہ کیا، پاکستان یہ مسئلہ سلامتی کونسل لے کر گیا، جہاں اس پر خصوصی اجلاس ہوا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں