The news is by your side.

Advertisement

الیکشن کمیشن کے ارکان کی تقرری کے لیے وزیر اعظم کا شہباز شریف کو خط

اسلام آباد: الیکشن کمیشن کے ارکان کی تقرری کے لیے وزیر اعظم عمران خان نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو خط لکھا ہے جس میں انہوں نے شہباز شریف کے قانونی نکات کو مسترد کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن کے ارکان کی تقرری کے لیے وزیر اعظم عمران خان نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو خط لکھا ہے۔ خط وزیر اعظم عمران خان کے دستخط کے ساتھ شہباز شریف کو بھیجا گیا ہے۔

خط میں وزیر اعظم نے شہباز شریف کے قانونی نکات کو مسترد کردیا ہے۔ خط میں کہا گیا کہ وزیر خارجہ کے خط میں قانونی قباحت نہیں تھی تاہم ان کا خط واپس لیا جا چکا ہے، سیکریٹری کی جانب سے لکھا گیا خط میری ہدایات کا متن تھا۔

وزیر اعظم کے خط میں کئی عدالتی فیصلوں کا حوالہ بھی دیا گیا ہے۔ خط میں وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بحیثیت وزیر اعظم تمام خالی آسامیاں بر وقت پوری کرنی ہے۔ خالی آسامیاں آئینی انداز میں پر کرنے کے لیے پر عزم ہوں۔

خط میں مشاورت سے متعلق سورۃ بقرہ کی آیات کا ترجمہ بھی درج ہے۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ 26 مارچ کا خط تمام آئینی تقاضوں کو پورا کرتا ہے، خط با مقصد، نتیجہ خیز مشاورت کی نیت سے لکھا گیا۔ ’خط میں زور دیتا ہوں مشاورتی عمل کا حصہ بنیں‘۔

وزیر اعظم نے اپنے خط میں مزید کہا ہے کہ جواب میں تحریری طور پر آپ بھی ارکان کے لیے نام نامزد کریں، مشاورتی عمل کا حصہ نہیں بنتے تو سمجھنے میں حق بجانب ہوں گے کہ آپ آئینی عمل سے احتراز برت رہے ہیں۔ ’عدم تعاون کی صورت میں آئینی طریقہ کار پر عمل کریں گے‘۔

اس سے قبل ایک بار سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر وزیر اعظم نے کہا تھا کہ پارلیمان پر عوام کے ٹیکسوں سے سالانہ اربوں کے اخراجات اٹھتے ہیں، ایوان زیریں سے حزب اختلاف کا ایک مرتبہ پھر واک آؤٹ ظاہر کرتا ہے شاید یہی ایک کام ہے جو انہیں کرنا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں