The news is by your side.

Advertisement

چینی صدر کا پاکستان کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کی غیر متزلزل حمایت کا اعادہ: اعلامیہ

بیجنگ: وزیر اعظم عمران خان اور چینی صدر شی جن پنگ کے درمیان ملاقات کا اعلامیہ جاری کردیا گیا، ملاقات میں چینی صدر نے پاکستان کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کی غیر متزلزل حمایت کا اعادہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان اور چینی صدر شی جن پنگ میں ملاقات کا اعلامیہ جاری کردیا گیا، اعلامیے کے مطابق چینی صدر نے وزیر اعظم عمران خان اور وفد کے اعزاز میں ظہرانہ دیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی، وزیر خارجہ، وزیر منصوبہ بندی، وزیر ریلوے اور مشیر تجارت بھی موجود تھے۔

اعلامیے کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت سے بھی آگاہ کیا۔ ملاقات میں وزیر اعظم نے خطے میں امن کے لیے فوری طور پر مقبوضہ وادی سے کرفیو اٹھانے پر زور دیا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر سے فوری طور پر کرفیو اٹھائے۔ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز صورتحال پیدا کر رکھی ہے۔

اعلامیے کے مطابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں لاکھوں لوگوں کا لاک ڈاؤن جاری ہے، کشمیر میں انسانی بحران جنم لے رہا ہے۔ اہم قومی امور پر چین نے ہمیشہ پاکستان کی حمایت کی۔ پاکستان کی اقتصادی ترقی میں چین کا کردار اہم ہے، سی پیک کی جلد تکمیل ہماری پہلی ترجیح ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے چین کو تمام اہم امور پر مکمل حمایت کے عزم کا اعادہ کیا۔

ملاقات میں چینی صدر نے سماجی و معاشی ترقی پر مبنی حکومتی ایجنڈے کو بھی سراہا۔ چینی صدر کا کہنا تھا کہ چین کے پاکستان کے ساتھ تعلقات مضبوط اور مستحکم ہیں۔

اعلامیے کے مطابق دونوں ممالک کے مابین تعلقات مزید مضبوط اور وسیع تر کرنے پر اتفاق ہوا۔ صدر شی جن پنگ نے سی پیک منصوبوں میں تیزی لانے پر پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک سے قومی و علاقائی معاشی ترقی کے عمل میں مدد ملے گی۔

چینی صدر نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی کوششوں کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ معاشی اصلاحات سے پاکستان مستحکم معاشی ترقی کی راہ پر گامزن ہے۔

چینی صدر نے پاکستان کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کی غیر متزلزل حمایت کا اعادہ بھی کیا۔ دونوں رہنماؤں نے افغان مسئلے کے پر امن حل پر اتفاق کیا۔

ملاقات میں دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون پر اظہار اطمینان کیا گیا جبکہ دونوں ممالک کے درمیان اعلیٰ سطحی روابط کے مزید فروغ پر بھی اتفاق ہوا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں