The news is by your side.

Advertisement

کالعدم ٹی ٹی پی میں شامل کچھ گروہ حکومت پاکستان سے بات کرنا چاہتے ہیں: وزیر اعظم

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان میں شامل کچھ گروہ امن کے لیے حکومت پاکستان سے بات کرنا چاہتے ہیں۔

پاکستان نے کالعدم ٹی ٹی پی سے غیر مسلح ہونے کا مطالبہ کر دیا ہے، وزیر اعظم عمران خان نے ترک ٹی وی کو انٹرویو میں کہا ہے کہ ٹی ٹی پی کے کچھ گروپس پاکستان سے بات کرنا چاہتے ہیں، ایسے گروہوں کے ساتھ افغانستان میں بات چیت ہو رہی ہے۔

وزیر اعظم نے انٹرویو میں بتایا کہ کالعدم ٹی ٹی پی کو غیر مسلح کرنے کے لیے مذاکرات کیے ہیں، جن میں افغان طالبان ثالث کا کردار ادا کر رہے ہیں۔

انھوں نے کہا اگر کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے یہ گروپ ہتھیار ڈال کر غیر مسلح ہو جاتے تو انھیں معافی دے دی جائے گی، اور وہ بھی معمول کی زندگی گزار سکیں گے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ کالعدم ٹی ٹی پی کے کچھ گروپس حکومت سے بات کرنا چاہتے ہیں، اور ہم تحریک طالبان پاکستان کے کچھ گروپس کے ساتھ رابطے میں ہیں، وہ ہتھیار ڈال دیں تو معاف کر دیں گے، وہ عام شہری کی طرح رہ سکتے ہیں۔

ترک ٹی وی کو انٹریو میں ان کا کہنا تھا کہ کیوں کہ مذاکرات افغانستان میں ہو رہے ہیں اس لیے کہا جا سکتا ہے کہ وہ بات چیت کے اس عمل میں تعاون کر رہے ہیں، وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ وہ مسائل کے فوجی حل پر یقین نہیں رکھتے ہیں، اور سمجھتے ہیں کہ بحیثیت سیاست دان معاملات کو سیاسی طور پر لے کر آگے بڑھنا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں