The news is by your side.

Advertisement

وزیراعظم کی اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں مصروفیات کوحتمی شکل دی گئی

58 ممالک کی پاکستان کے مؤقف کی حمایت معمولی بات نہیں

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کی اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس میں مصروفیات کو حتمی شکل دی گئی جبکہ ملاقاتوں کا حتمی شیڈول بھی طے کرلیا گیا ہے، وزیرخارجہ نے کہا 58 ممالک کی پاکستان کے مؤقف کی حمایت معمولی بات نہیں، بھارت کیلئےلمحہ فکریہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت پارٹی رہنماؤں کا اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزرا،پارٹی رہنمااورارکان پارلیمان شریک ہوئے ، اجلاس میں وزیراعظم کے دورہ امریکا سے متعلق حتمی مشاورت کی گئی۔

پارٹی رہنماؤں کے اجلاس میں یواین جنرل اسمبلی میں وزیراعظم کی مصروفیات کوحتمی شکل دے دی گئی جبکہ وزیراعظم کی ملاقاتوں کا حتمی شیڈول بھی طے کرلیا گیا ہے۔

اجلاس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے جنیوا کے کامیاب دورے سے وزیراعظم کو آگاہ کیا۔

وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے وزیراعظم سے ملاقات کے بعد گفتگو کرتے ہوئے کہا وزیراعظم کواپنے3روزہ دورےسےمتعلق بریف کیا اور 58 ممالک کی طرف سے بڑی پیشرفت سے آگاہ کیا، 58 ممالک کی پاکستان کے مؤقف کی حمایت معمولی بات نہیں۔

مزید پڑھیں :  وزیراعظم عمران خان 27 ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کریں گے

شاہ محمودقریشی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے غیرمعمولی کامیابی پرخوشی کا اظہارکیا ہے، یورپی یونین نے اپنے بیان میں یواین قرارداد کا تذکرہ کیا، یہ ہمارے مؤقف کی تائید اور بڑی سفارتی کامیابی ہے۔

وزیرخارجہ نے کہا 58ممالک کاہمارےمؤقف کوسراہنابھارت کیلئےلمحہ فکریہ ہے، وزیراعظم سےنشست میں دورہ امریکاپربھی بات ہوئی، وزیراعظم کی جنرل اسمبلی اجلاس میں مصروفیات کو حتمی شکل دی گئی۔

خیال رہے اقوام متحدہ کے اجلاس میں شرکت کے لیے وزیر اعظم عمران خان 23 ستمبر کو نیویارک روانہ ہوں گے  اور  27ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کریں گے، اپنے خطاب میں وہ مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی بربریت کے معاملے کو اٹھائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں