The news is by your side.

Advertisement

وزیر اعظم کا 19 بڑے شہروں میں کلین گرین سٹی انڈیکس لانچ کرنے کا اعلان

35 سال پہلے لاہور میں نلکے سے پانی پیتے تھے، آج یہاں سانس تک نہیں لے سکتے: وزیر اعظم

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے 19 بڑے شہروں میں کلین گرین سٹی انڈیکس لانچ کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس کا افتتاح کردیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ 19 بڑے شہروں میں کلین گرین سٹی انڈیکس لانچ کریں گے، انڈیکس کا مقصد پینے کے صاف پانی کی فراہمی، نکاسی آب کے محفوظ نظام کو یقینی بنانا ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے ماحولیاتی آلودگی کے خلاف کام کرنے کے بھرپور عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آلودگی خاموش قاتل بن چکی ہے، 35 سال پہلے ہم لاہور کا پانی نلکے سے پیتے تھے، آج لاہور میں سانس تک نہیں لے سکتے۔ لاہور میں آلودگی انتہا کو پہنچ چکی ہے بوڑھے اور بچوں کی زندگیوں کو خطرہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ 10 سالوں میں لاہور سے 70 فیصد درخت کاٹے گئے، ماحولیاتی آلودگی سے بیماریوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان ہمارے لیے اللہ کی نعمت ہے، پاکستان میں ہر قسم کا موسم ہے، ہر قسم کا پھل اگ سکتا ہے۔ اللہ نے پاکستان کو قدرتی وسائل سے مالا مال کیا ہے۔ ہم پاکستان کی قدر کریں گے تو سونا اگلے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا بھر کے لیے سیاحت کا بڑا مرکز بن سکتا ہے۔ ملک تباہ کردیا گیا ہمیں مل کر مسائل کا مقابلہ کرنا ہے۔ گرین چیمپئنز میں تمام طلبہ نے شرکت کرنا ہوگی۔ 19 بڑے شہروں میں کلین گرین سٹی انڈیکس لانچ کریں گے۔ انڈیکس کا مقصد پینے کے صاف پانی کی فراہمی اور نکاسی آب کے محفوظ نظام کو یقینی بنانا ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پنجاب میں بلدیاتی نظام لا رہے ہیں، سندھ میں بھی ترقی بلدیاتی نظام کے بغیر ممکن نہیں۔ بلدیاتی نظام میں پیسہ صوبوں کے ذریعے گاؤں میں منتقل ہوگا۔ گاؤں میں الیکشن ہوں گے، وہ خود فیصلہ کریں گے پیسہ کہاں خرچ کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیا پاکستان کے مقصد کو سمجھنے کی ضرورت ہے، نئے پاکستان کا تصور پہلے ذہنوں میں آئے گا، زمین پر بعد میں آئے گا۔ اب بھی وقت ہے کہ ہم سب مل کر پاکستان کو سرسبز بنائیں۔ ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے پر حکومت کی پوری توجہ ہے، لوگ آہستہ آہستہ ٹیکس دینا شروع کر رہے ہیں پیسہ آ رہا ہے۔ جیسے جیسے پیسہ آئے گا ماحول ٹھیک کرنا ہے، دریاؤں کو صاف کرنا ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ جو کام اپنی ذات کے لیے کرتے ہیں اس میں اللہ کی برکت نہیں ہوتی۔ انسانوں اور اپنی ذات کے لیے کام دو مختلف نظریے ہیں۔ ذات کی زندگی گرانے والوں سے ملک کو نقصان پہنچ رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گند ڈال کر دریاؤں کو خراب کیا گیا یہ صاف بھی کیے جا سکتے ہیں۔ پہلے لندن میں بھی آلودگی تھی اب اس کی ہوا صاف کردی گئی۔ بچے اور نوجوانوں کو حوصلہ ملے گا تو وہ ماحولیاتی آلودگی میں کردار ادا کریں گے۔ پاکستان کو سرسبز اور صاف بنانے کے لیے سب کو مل کر کام کرنا ہوگا۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ پختونخواہ میں 5 سال میں ایک ارب درخت لگائے، ہمیں شہروں میں چن چن کر علاقوں کو سر سبز بنانا ہوگا۔ عوام کو ساتھ ملا کر پاکستان کو صاف اور سرسبز بنائیں گے۔ پاکستان کو ایسا ملک بنائیں گے جس کی مثال دنیا دے گی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں