site
stats
اہم ترین

وزیر اعظم کا حیدر آباد میں انٹرنیشنل ایئر پورٹ بنانے کا اعلان

حیدر آباد: وزیر اعظم میاں نواز شریف نے ن لیگ کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تبدیل ہورہا ہے۔ انہوں نے حیدر آباد کے لیے انٹرنیشنل ایئر پورٹ اور میٹرو بس کے منصوبے کا اعلان کیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم نواز شریف آج ایک روزے دورے پر حیدر آباد پہنچے جہاں مسلم لیگ کے کارکنان نے وزیر اعظم کا استقبال کیا۔

وزیر اعظم کی آمد کے موقع پر ورکرز کنونشن بھی منعقد کیا گیا۔ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ حیدر آباد سے موٹر وے سکھر اور پھر ملتان جائے گی۔ موٹر وے سے کراچی سے پشاور ایک دن میں پہنچیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان بدل رہا ہے، ترقی کر رہا ہے۔ اس سے پہلے کوئی غیر ملکی سرمایہ کار کراچی یا پاکستان آنے کو تیار نہیں تھا۔2013 سنہ تک برا حال تھا۔ ہر طرف بے چینی تھی۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ حیدر آباد میں سڑکیں ٹوٹی ہوئی ہیں اور پینے کا پانی نہیں۔ کراچی کا تذکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کراچی جاتا ہوں تو ہر جگہ کچرے کے ڈھیرے اور دھول ہی دھول ہے۔

حیدر آباد کے لیے ترقیاتی منصوبے

وزیر اعظم نے اپنے خطاب میں حیدر آباد کے لیے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا اعلان کیا۔ انہوں نے حیدر آباد کے لیے انٹرنیشنل ایئر پورٹ، میٹرو بس کے منصوبے اور یونیورسٹی بنانے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ یونیورسٹی کے لیے 100 کروڑ روپے فراہم کریں گے۔

انہوں نے حیدر آباد میں ہیلتھ کارڈ کے اجرا کا بھی اعلان کیا اور کہا کہ بہت جلد مریم نواز آ کر کارڈ کا اجرا کریں گی۔

علاوہ ازیں وزیر اعظم نے حیدر آباد کے لیے 50 کروڑ روپے کی گرانٹ کا بھی اعلان کیا۔

ن لیگ کے کارکنان کا احتجاج

اس سے قبل وزیر اعظم حیدر آباد پہنچے جس کے بعد وہ مگسی ہاؤس گئے۔ انہوں نے مگسی ہاؤس میں پاکستان مسلم لیگ ن سندھ کے اہم رہنماؤں سے ملاقات کی اور پارٹی امور پر تبادلہ خیال کیا۔

اس موقع پر سندھ سے تعلق رکھنے والے ن لیگ کے ناراض کارکنوں نے حیدر آباد پریس کلب کے سامنے احتجاج کیا۔ کفن پوش ناراض کارکنان نے پارٹی کا علامتی جنازہ نکالا اور نعرے لگائے۔

ناراض کارکنان کا شکوہ تھا کہ مقامی قیادت ان کو نظر انداز کر رہی ہے اور ان کے مسائل حل نہیں کیے جاتے، ان کی نہیں سنی جاتی۔

کارکنان کا کہنا تھا کہ وہ وزیر اعظم کے سامنے بھی احتجاجی مظاہرہ کریں گے۔ انہوں نے وزیر اعظم سے مطالبہ کیا کہ سندھ کی موجودہ صوبائی تنظیم کو تحلیل کر کے نئی تنظیم سازی کی جائے۔

وزیر اعظم کی آمد کے موقع پر حیدر آباد میں سیکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کیے گئے ہیں۔

وزیراعظم کو 10 تولہ سونے کا تاج نہیں پہنایا جاسکا

دریں اثنا وزیراعظم نواز شریف کو 10 تولہ سونے کا تاج نہیں پہنایا جاسکا، تاجروں نے ان کے لیے یہ خصوصی تاج تیار کیا تھا۔

اطلاعات ہیں کہ سیکیورٹی وجوہات کی بنا پربزنس فورم کے ارکان کو وزیراعظم کو تاج پہنانے سے روک دیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top