site
stats
پاکستان

مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے کشمیری اہم فریق ہیں: وزیر اعظم

اسلام آباد: وزیر اعظم محمد نواز شریف نے دو ٹوک انداز میں واضح کر دیا کہ پاکستان کشمیر کی حق خودارادیت کی ہمیشہ اخلاقی، عملی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔

تفصیلات کے مطابق پارلیمنٹ کے زیر اہتمام اسلام آباد میں کشمیر پر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کرنا ہوگا۔

وزیر اعظم نے دو ٹوک مؤقف اپناتے ہوئے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ اور شناخت ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنے تمام پڑوسی ممالک سے پر امن تعلقات کا خواہاں ہے۔

مزید پڑھیں: ایران نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کردی

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ کشمیر کے نوجوان آزادی کی نئی تاریخ رقم کر رہے ہیں۔ برہان وانی کی شہادت نے کشمیریوں کی جدوجہد کو نئی زندگی بخشی، جبکہ برہان وانی کی شہادت سے نوجوانوں میں نیا جوش و ولولہ پیدا ہوا۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ نے 70 سال قبل کشمیریوں کو آزادی دینے کا وعدہ کیا تھا۔ استصواب رائے سے ہی کشمیریوں کو حقوق دیے جا سکتے ہیں۔

وزیر اعظم نے ایک بار پھر اس عزم کا اعادہ کیا کہ قوم، پارلیمنٹ اور حکومت اخلاقی اور سفارتی سطح پر کشمیریوں کی جدوجہد کی حمایت جاری رکھے گی۔ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے مقبوضہ کشمیر کے لوگ اہم فریق ہیں۔

کانفرنس سے وزیر اعظم کے مشیر برائے امور خارجہ سرتاج عزیز نے بھی خطاب کیا۔ انہوں نے ینگ پارلیمنٹرینز کی جانب سے فورم کے انعقاد کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوج کشمیریوں کے خلاف طاقت کا بے دریغ استعمال کر رہی ہے۔ کشمیری اپنے حق خود ارادیت کے لیے مسلسل جدوجہد کر رہے ہیں۔

مزید پڑھیں: طلبا مسئلہ کشمیر کو سوشل میڈیا پر اجاگر کریں، صدر آزاد کشمیر

انہوں نے بھی واضح کیا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کے بغیر پاکستان اور بھارت کے تعلقات معمول پر نہیں آسکتے۔ پاکستان کشمیریوں کی سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔

اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوج کشمیریوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہے۔ بھارت پاکستان میں دہشت گردی کے لیے افغانستان کی سرزمین استعمال کر رہا ہے۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ بھارت کشمیریوں کا قتل عام فوری طور پر بند کرے۔

واضح رہے کہ کشمیر میڈیا سیل کی جانب سے جاری کردہ ایک رپورٹ کے مطابق بھارت نے سال 2016 میں کشمیریوں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے رکھے۔ بھارتی فوج نے 303 کشمیریوں کو شہید، 19 ہزار افراد کو زخمی جبکہ 12 ہزار 6 سو 4 افراد کو قید کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top