The news is by your side.

وزیراعظم کا صادق سنجرانی سے فواد چوہدری پر سینیٹ میں پابندی کے معاملے پر تشویش کااظہار

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی سے فوادچوہدری پر سینیٹ میں پابندی کے معاملے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے معاملات افہام تفہیم سے حل کرنے پر اتفاق کیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کےدرمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا، گزشتہ رات رابطے میں وزیراعظم نے سینیٹ چئیرمین صادق سنجرانی سے فواد چوہدری پرسینیٹ میں پابندی کے معاملے پر تشویش کا اظہارکیا۔

چئیرمین سینیٹ کا کہنا تھا فوادچوہدری سےکوئی ذاتی تنازع نہیں ہے، وزیراطلاعات کےجارحانہ رویےسے اجلاس کے دوران مشکلات ہوتی ہیں۔

وزیراعظم عمران خان اورسینیٹ کے چئیرمین کے درمیان فون پر بات چیت میں معاملہ افہام و تفہیم سے حل کرنے پر اتفاق کیا گیا جبکہ وزیراعظم نے چیئرمین سینیٹ کوایوان چلانے کے لئے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

ذرائع کے مطابق وزیردفاع پرویز خٹک نے وزیراعظم اورچیئرمین سینیٹ کےدرمیان رابطہ کرایا۔

گذشتہ روز وزیر اطلاعات سے متعلق چیئرمین سینیٹ کی رولنگ پر وفاقی کابینہ کی مشاورت کی گئی تھی ، وزیر اعظم نے وزیر دفاع کو چیئرمین سینیٹ سے رابطہ کرکے مسئلہ افہام و تفہیم سے حل کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا تھا کہ کسی کو وزراکی تضحیک کا حق نہیں۔

جس کے بعد وزیر دفاع پرویز خٹک نے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی سے ملاقات کی تھی ، ملاقات میں ایوان بالاکی کارروائی کوافہام وتفہیم سے چلانے پر تبادلہ خیال کیا گیا اور چیئرمین سینیٹ کو وزیراعظم کی جانب سے تعاون کی یقین دہانی کرائی گئی۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے وزیراعظم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا تھا کہ وزیراعظم نے وزیر دفاع کوبھیج کر ایوان کا وقار بلند کیا، پارلیمان کی بالادستی،جمہوری رویوں کا فروغ سب کافرض ہے، وزیراعظم کاپارلیمان کی بالادستی کےحوالےسے کردار لائق تحسین ہے۔

وزیر اطلاعات نے میڈیا سے گفتگو میں کہا تھا کہ  چیئرمین سینیٹ کی رولنگ سے متعلق بھی کابینہ میں بات ہوئی ہے، جس پر وزیراعظم نے کہا کہ کسی کو یہ حق نہیں کہ وہ وفاقی وزیرکی تضحیک کرے، چیئرمین سینیٹ کے رویے پر حکومت کو افسوس ہے، وفاقی کابینہ کے بغیر سینیٹ کارروائی چل سکتی ہے تو چیئرمین بتادیں، میں منتخب ہو کر آیا ہوں، چیئرمین سینیٹ منتخب ہو کر نہیں آئے۔

واضح رہے چئیرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے وزیراطلاعات کے سینیٹ میں پابندی کی رولنگ دی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں