The news is by your side.

Advertisement

کالعدم تنظیم کے مطالبات پر وزیر اعظم کا ردِ عمل

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے کالعدم تنظیم کے تمام مطالبات ماننے سے انکار کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ذرائع نے کہا ہے کہ آج اہم کابینہ اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان اور کابینہ اراکین نے کالعدم تنظیم تحریک لبیک پاکستان کے تمام مطالبات ماننے سے انکار کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ ریاست کی رِٹ ہر حال میں قائم رکھی جائے گی، وزیر اعظم نے کہا ایسے مطالبات تسلیم نہیں کیے جا سکتے جو پاکستان کے مفاد میں نہ ہوں۔

انھوں نے کہا احتجاج کی آڑ میں پولیس والوں کو مارنا ظلم ہے، ہم چاہتے ہیں کہ مذاکرات سے معاملات حل ہوں، لیکن راستے بند کرنے والوں کے خلاف سختی سے نمٹا جائے۔

ذرائع کے مطابق کابینہ اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ مظاہرین کو جہلم سے آگے نہیں آنے دیا جائےگا، اور قانون ہاتھ میں لینے والوں سے سختی سے نمٹا جائے گا۔

کالعدم تنظیم کااحتجاج : حکومت کا مظاہرین کو روکنے کے لیے رینجرز تعینات کرنے کا فیصلہ

مظاہرین کو روکنے کے لیے رینجرز تعینات کرنے اور پشاور جی ٹی روڈ بند کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے، ارکان کا کہنا تھا کہ جانی اور مالی نقصان پہنچانے والے عناصر کو رعایت نہیں دینی چاہیے۔

وزیر داخلہ شیخ رشید نے کابینہ کو کالعدم تنظیم سے مذاکرات پر بریفنگ دی اور ڈیڈ لاک سے آگاہ کیا۔

واضح رہے کہ چند دنوں سے کالعدم تنظیم ٹی ایل پی نے احتجاج کی آڑ میں راستے بند کر رکھے ہیں، جس کے باعث لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے، ٹی ایل پی کے اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ اور شرکا کو روکنے کے لیے پولیس کی شیلنگ جاری ہے، جگہ جگہ رکاوٹیں اور جہلم کے تینوں پلوں کی حفاظتی دیواریں توڑ کر کنٹینر رکھ دیے گئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں