The news is by your side.

Advertisement

وزیراعظم کا طیارہ حادثے کی شفاف تحقیقات کا حکم، جنید جمشید کے بیٹے کو فون

اسلام آباد: وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پی آئی اے کے طیارے کو پیش آنے والے حادثے سے متعلق حقائق عوام کے سامنے لائے جائیں گے،  جس کے لیے انہوں نے سیفٹی تحقیقاتی بورڈ کے تحت انکوائری کو جلد مکمل کرنے کی ہدایت بھی جاری کی۔

یہ ہدایات وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے اسلام آباد میں ہونے والے ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس میں بریفنگ سننے کے بعد دی۔ اُن کا کہنا تھا کہ سیفٹی تحقیقاتی بورڈ کے تحت انکوائری کو جلد از جلد مکمل کیا جائے تا کہ حقائق عوام کے سامنے لائے جا سکیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ سول ایوی ایشن پاک فضائیہ کے سینئر افسر کو انکوائری ٹیم میں شامل کریں تا کہ تحقیقات میں مدد حاصل رہے اور تحقیقات شفاف طریقے سے منطقی انجام تک پہنچے جس کی روشنی مسافروں کے تحفظ اور طیاروں کی بہتر کارکردگی کے حوالے سے اہم اور ضروری اقدامات کیے جا سکیں۔

قبل ازیں اجلاس میں سیکریٹری ایوی ایشن نے وزیراعظم کو حادثے سے متعلق تحقیقات کی ابتدائی رپورٹ پیش کی اور ساتھ ہی انہیں اب تک کی جانے والی امدادی کارروائیوں، لاشوں کی منتقلی اور ایمرجنسی ڈیسک سے متعلق تفصیلی بریفنگ بھی دی۔

اجلاس میں چیئرمین پی آئی اے اعظم سہگل نے بھی شرکت کی ان کا کہنا تھا کہ پی آئی اے کے طیاروں کا معیار عالمی اسٹینڈرڈ کے مطابق ہے اور مسافروں کے تحفظ کے لیے ہر احتیاط بروئے خاطر لائی جاتی ہے۔

سی ای او پی آئی اے نے وزیر اعظم کو بتایا کہ جہاز اڑانے والا پائلٹ اور عملہ انتہائی تجربہ کار تھا، جاں بحق پائلٹ کا فلائنگ تجربہ 10 ہزار گھنٹے سے زائد کا تھا۔

اجلاس میں وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان ، چیئرمین پی آئی اے ، سیکریٹری سول ایوی ایشن سمیت اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

دریں اثنا نواز شریف نے مرحوم جنید جمشید کے بیٹے تیمور جمشید کو ٹیلی فون کیا اور ان سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے جنید جمشید کی شہادت پر دکھ کا اظہار کیا ۔

وزیراعظم نے کہا کہ دل دل پاکستان کا نغمہ ہمارے دلوں میں ہمیشہ زندہ رہے گا انہوں نے بیٹے کو یقین دہانی کرائی کہ ان کے والد کا جسد خاکی جلد از جلد ان تک پہنچا دیا جائےگا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں