The news is by your side.

Advertisement

دہشت گردوں کے سربراہ افغانستان میں روپوش ہیں، وزیراعظم

اسلام آباد : وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ دہشت گردوں کے زیادہ ترسرغنہ افغانستان میں روپوش ہیں اور پاکستان میں زیادہ ترحملےافغانستان سے ہوتے ہیں.

وہ ایک نجی ٹی وی چینل سے بات کر رہے تھے، وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پاکستان کے 2 لاکھ فوجی مشرقی سرحد پردہشت گردی کے خلاف لڑ رہے ہیں.

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف پاکستان کا مؤقف دنیا کے سامنے ہے اور افغانستان میں امن پاکستان سے زیادہ کوئی اور ملک نہیں چاہتا جس کا برملا اظہار کرتے رہتے ہیں.

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پاکستان مسئلہ کشمیر پرکبھی بھی ایک قدم پیچھے نہیں ہٹا لیکن بھارت کشمیری عوام کی جدوجہد سے دنیا کی نظریں ہٹانے کے لیے کبھی لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرتا ہے تو کبھی پیلٹ گن کا استعمال کرتا ہے.

وزیراعظم نے کہا کہ کشمیریوں کی اخلاقی، سفارتی اور سیاسی حمایت ہمیشہ جاری رکھیں گے تاہم بھارت سے خیر کی توقع نہیں پھر بھی بامعنی مذاکرات کے لیے تیار ہیں.

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ آئین کےمطابق اپنی ذمہ داریاں نبھا رہا ہوں اور بطوروزیراعظم نیب عدالت کے باہر رینجرز معاملے پرتفتیش کرنا میرے فرائض منصبی میں شامل ہے.

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی میٹنگ میں کھل کربات ہوتی ہے اور 2 جگہ سے پالیسی بننا کسی ملک میں ممکن نہیں، یہ بات درست نہیں.

وزیراعظم پاکستان نے سوال کے جواب میں مزید کہا کہ حکومت کے خلاف کوئی سازش نظر نہیں آتی تاہم اگر کوئی سازش ہوئی تواس کا مقابلہ کریں گے.


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں.

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں