The news is by your side.

Advertisement

طلبا کےبعد اب چیئرمین پی ایم ڈی سی بھی این ٹی ایس کے مخالف

کراچی : طلبا کے بعد اب چیئرمین پی ایم ڈی سی ڈاکٹر شبیر نے بھی این ٹی ایس کی مخالفت کردی، ڈاکٹر شبیر کہتے ہیں ین ٹی ایس سسٹم کوفوری ختم کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق این ٹی ایس پیپر لیک کے معاملے پر پنجاب اور سندھ کے طلبا سراپا احتجاج ہے، نیشنل ٹیسٹنگ سروس متنازعہ ہوگئی، طلبا کے بعد چیئرمین پی ایم ڈی سی بھی این ٹی ایس کے مخالف ہوگئے ۔

چیئرمین پاکستان میڈیکل اینڈڈینٹل کونسل پروفیسرڈاکٹرشبیر کا کہنا ہے کہ این ٹی ایس متنازع ہوچکاہے، اسے مافیا کی طرز پر چلایاجارہاہے۔ این ٹی ایس سسٹم کوفوری ختم کیاجائے۔

پروفیسر ڈاکٹرشبیر نے کہا کہ این ٹی ایس کےنام پرلاکھوں روپے طالبعلموں سےوصول کئے جاتےہیں، ایک کےبعد ایک نئے سسٹم لانے کے بجائے میٖڈیکل کالجزمیں داخلےکیلئے پرانا نظام بحال کیا جائے۔

چیئرمین پاکستان میڈیکل اینڈڈینٹل کونسل کا کہنا تھا کہ تعلیمی بورڈزپراعتراض کےبجائےسسٹم بہترکیاجائے۔

دوسری جانب نیب کی این ٹی ایس کےخلاف انکوائری جاری ہے. حکام نے یقین دلایا کہ طلبا کے مستقبل سے کسی کو کھیلنے نہیں دیں گے اور نہ ہی کسی کی محنت کو رائیگاں جانے دیں گے۔

نیب کی جانب سے طلباء و طالبات کے مفادات کا تحفظ ہرصورت یقینی بنایا جائے گا۔

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے سندھ بھر میں میڈیکل یونیورسٹیز اور کالجز میں داخلہ ٹیسٹ کا این ٹی ایس پرچہ لیک ہونے کا انکشاف ہوا ، جس کے بعد حکومت سندھ نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے اسپیشل سیکرٹری صحت کی سربراہی میں 5 رکنی تحقیقاتی کمیٹی قائم کی گئی، جو 10 روز کے اندر تحقیقات کے بعد رپورٹ سندھ حکومت کو ارسال کرے گی۔

واضح رہے کہ پہلی بار سندھ میں پہلی بار بیک وقت 5 شہروں کراچی، حیدرآباد، سکھر، نوابشاہ اور لاڑکانہ میں داخلہ ٹیسٹ لیے گئے تھے، جس میں صوبے بھر سے 21 ہزار سے زائد طلبا و طالبات نے شرکت کی تھی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں