The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن نے 5 سال میں قرض لینے کے سارے ریکارڈ توڑ دیے

اسلام آباد : کشکول توڑنے کی دعوے دار حکومت نے کشکول بھرنے کے ریکارڈ توڑ دیئے، اتنا قرض لیا کہ ملک کےغیر ملکی قرضوں کا حجم تاریخ کی بلند ترین سطح پر جا پہنچا، ملک کا ہر بچہ ایک لاکھ سینتیس ہزارروپے کا مقروض ہوگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق معاشی بحالی کے دعوے نون لیگ نے ملکی معشیت پر قرضوں کا انبار لگا دیئے، نواز حکومت نے پانچ سال میں 30.1 ارب ڈالر کے غیر ملکی قرضے لئے۔

اعداد وشمار کے مطابق 2013 میں غیر ملکی قرضوں کا حجم 60 ارب 90 کروڑ ڈالر تھا جوکہ اب بڑھ کر 91 ارب ڈالر ہوگیا ہے جبکہ پانچ سال میں مقامی قرضے 65 کھرب روپے بڑھ گئے۔

سال2013 میں مقامی قرضوں کا حجم 95 کھرب روپے تھا جوکہ اب بڑھ کر 160 کھرب روپے ہوگیا ہے، حکومت نے قرض لینے کے لئے یورو بانڈز،سکوک ہو یا عالمی بینک اور آئی ایم ایف کوئی ذریعہ نہیں چھوڑا۔


مزید پڑھیں :  نگراں وزیر خزانہ کا انتخابات کے بعد آئی ایم ایف پروگرام میں جانے کا عندیہ


خیال رہے کہ اعداد وشمار کے مطابق ملک پر قرضوں کے بوجھ میں خطرناک حد تک اضافہ ہوا، رواں مالی سال کے گیارہ ماہ میں ملک پر قرضوں میں دس ارب ڈالر کا اضافہ ہوا جبکہ غیر ملکی قرضوں کا حجم 92 ارب ڈالر ہوگیا۔

گذشتہ روز ملکی معشیت کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے باعث نگراں وزیر خزانہ نے انتخابات کے بعد آئی ایم ایف پروگرام میں جانے کا عندیہ دیا تھا، ڈاکٹر شمشاد اختر کا کہنا کہ پروگرام کے حصول کیلئے ابتدائی فریم ورک تیار کر لیا گیا ہے۔

ماہرین کے مطابق بیرونی خدشات میں اضافے کے باعث روپیہ بھی مسلسل دباؤ کا شکار ہے، دسمبر سے اب تک روپے کی قدر میں بیس روپے کی کمی ہوئی ہے، روپےکی قدر کم ہونے سے ملک پرقرضوں کے بوجھ میں تقریبا 18 سو ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں