The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن نے انتخابی منشور کا اعلان کر دیا: صحت اور تعلیم کے شعبے میں پنجاب میں کی جانے والی اصلاحات ملک بھر میں پھیلانے کا اعلان

لاہور: مسلم لیگ ن نے انتخابی منشور 2018 کا اعلان کر دیا، پارٹی کے صدر شہباز شریف نے منشور پیش کرتے ہوئے صحت اور تعلیم کے شعبے میں پنجاب میں کی جانے والی اصلاحات ملک بھر میں پھیلانے کا اعلان کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں منعقدہ تقریب میں شہباز شریف نے کہا کہ 2013 میں جب ن لیگ بر سرِ اقتدار آئی تو بڑے چیلنجز کا سامنا تھا، لوڈ شیڈنگ اور دہشت گردی جیسے بڑے مسائل سامنے تھے، معیشت تباہ تھی، ہر طرف بے روزگاری تھی، بر آمدات کا برا حال تھا، زرعی و صنعتی شعبے زوال پذیر تھے، ن لیگ نے ان چیلنجز پر کام یابی سے قابو پایا۔

شہباز شریف نے کہا نیب کو چیلنج کرتا ہوں، عدالت عظمیٰ سے بھی کہتا ہوں، چیک کرے اگر ایک پائی کا بھی ذمہ دار ہوں، جنھوں نے ایک دھیلے کا کام نہیں کیا وہ بڑے بڑے نعرے لگا رہے ہیں، جماعتوں نے 2013 میں جو منشور پیش کیا اس پر کتنا عمل کیا؟ کس پارٹی نے منشور پرعمل کیا یا سیاسی قلابازیاں ہی کھائیں۔

سابق وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم نے 5 ہزار میگا واٹ پر دو ڈھائی ارب ڈالر لگائے، توانائی منصوبوں میں قوم کے 160 ارب بچائے، خود روزگار اسکیم پروگرام کے تحت 20 لاکھ افراد کو روزگار ملا، ہمارے منصوبے شفاف ترین تھے، سی پیک بجلی منصوبوں میں چین سرمایہ کاری کر رہا ہے۔

انھوں نے کہا کراچی سمیت میں ملک بھر میں امن قائم کیا، پنجاب ایجوکیشن انڈوومنٹ فنڈ کے تحت پونے 4 لاکھ بچوں کو وظائف دیے، ہیلتھ کارڈ کا اجرا کیا، 17 اضلاع میں اجرا ہوچکا ہے، پورے ملک تک دائرہ بڑھائیں گے، پنجاب کے تمام اضلاع میں سی ٹی اسکین کی مفت سہولت میسر ہے، اسپتالوں میں 7 ہزار بیڈز کا اضافہ کیا، بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے فنڈز 40 ارب سے بڑھا کر 120 ارب کیے۔

منشور 2018


شہباز شریف نے کہا کہ معاشرے کے محروم طبقے کو پاؤں پر کھڑا کرنا پارٹی منشور کا حصہ ہے، عوامی فلاح کے پروگراموں کا دائرہ ملک بھر میں پھیلائیں گے، پنجاب میں شعبہ صحت میں کی گئی اصلاحات ملک بھرمیں نافذ کریں گے، پیف جیسے انقلابی تعلیمی پروگرام کا دائرہ بھی ملک بھر میں پھیلایا جائے گا، ہر اسکول میں ٹیکنیکل ووکیشنل ٹریننگ سینٹر بنائیں گے۔

صدر ن لیگ نے منشور پیش کرتے ہوئے کہا تعلیم یافتہ اور ہنرمند طبقے کوروزگار کی فراہمی کے لیے سرمایہ کاری کو فروغ دیں گے، موزوں صنعتوں کا قیام ہمارے منشور کا حصہ ہے، زرعی اجناس کی پراسیسنگ کے لیے انڈسٹریل کمپلیکس تعمیر کریں گے، خنجراب سے گوادر تک ایک نئی دنیا آباد ہو رہی ہے، دیامر بھاشا ڈیم کا بڑا توانائی منصوبہ مکمل کریں گے۔

شہباز شریف نے کہا زرعی صنعتی انقلاب لائیں گے، ملک بھر کو دنیا کا جدید ترین ٹرانسپورٹ سسٹم دیں گے، پنجاب اسپیڈ کو پاکستان اسپیڈ میں تبدیل کریں گے، محصولات کے نظام کو کرپشن فری بنانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی سے منسلک کریں گے۔

ن لیگ نے کیا دیا؟


شہباز شریف نے کہا کہ ن لیگ کی حکومت نے کاشت کاروں کو اربوں روپے کے قرضے دیے، ٹیوب ویلز اور کھاد پر کسانوں کو اربوں روپے کی سبسڈی دی، پکیاں سڑکاں، سوکھے پینڈے پروگرام پر 100 ارب خرچ کیے، کسانوں کی منڈیوں تک آسان رسائی کے لیے ہزاروں کلو میٹر روڈ بنائے۔

اینگری ”ینگ“ مین


لاہور میں انتخابی منشور کے اعلان کے دوران کارکن کے نعروں پر شہباز شریف برہم ہوگئے، نعرے لگانے پر ڈائس سے اتر گئے، پارٹی رہنماؤں کے اصرار پر شہباز شریف دوبارہ ڈائس پر آگئے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں