The news is by your side.

Advertisement

بلال یاسین پر فائرنگ کے ملزمان کی تصاویر منظرعام پر، ویڈیو دیکھیں

لاہور : مسلم لیگ ن کے ایم پی اے بلال یاسین پر فائرنگ کا واقعے کے کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے جس میں حملہ آوروں کی تصاویر منظرعام پرآگئیں۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک حملہ آور نے سبز اور دوسرے نے سیاہ رنگ کی جیکٹ پہن رکھی تھی اس کے علاوہ مسلح حملہ آوروں نے منہ پر رومال بھی لپیٹ رکھے تھے۔

پولیس کو موصول ہونے والی سی سی ٹی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کچھ دور جا کر حملہ آوروں نے اپنے چہروں سے رومال ہٹا دئیے تھے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ سیف سٹی اتھارٹی کا جائے وقوعہ سے50میٹر قریب لگا کیمرا خراب نکلا، ملزمان کی تصاویر شناخت کیلئے نادرا دفتر بھجوادی گئی ہیں۔

اس سے قبل بلال یاسین پر قاتلانہ حملے میں استعمال ہونے والا پستول پولیس کو مل گیا تھا جبکہ حملے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی منظر عام پرآگئی۔

حملے کا مقدمہ داتا دربار تھانے میں درج کرلیا گیا ہے، پولیس کے مطابق ملزمان کے فرار ہوتے ہوئے پستول ان کے ہاتھ سے گرگیا تھا۔

پستول کے مالک کا پتہ لگایا جارہا ہے، سیف سٹی کیمروں سے ملزمان تک پہنچنے میں مدد ملے گی، دوسری جانب مسلم لیگ نون کے رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین کو آپریشن تھیٹر سے آئی سی یو منتقل کردیا گیا جہاں ان کی حالت بہتر بتائی جارہی ہے۔

قبل ازیں پولیس کوجمع کروائی گئی درخواست میں بلال یاسین نے بتایا تھا کہ سابق کونسلر میاں اکرم کو ملنے موہنی روڈ آیا تھا، میاں اکرم کے گھر کے باہر بغیر نمبر پلیٹ موٹر سائیکل پر دو حملہ آور آئے۔

بلال یاسین نے درخواست میں مزید کہا کہ حملہ آوروں نے موٹر سائیکل سے اتر کر جان سے مارنے کے لیے فائرنگ کردی، ایک گولی پیٹ اور دوسری بائیں ٹانگ پر لگی۔

ملزمان کے حلیے کے حوالے سے رکن پنجاب اسمبلی نے بتایا کہ حملہ آوروں نے جینز کی پینٹ اور جیکٹس پہن رکھی تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں