The news is by your side.

Advertisement

کارکن کو نوازشریف سے ہاتھ ملانا مہنگا پڑگیا، سیکیورٹی اہلکاروں کا بہیمانہ تشدد

لاہور : ن لیگ کی جانب سے لاہور میں یوم تکبیر کی تقریب کے دوران نواز شریف سے ہاتھ ملانے کے لیے اچانک قریب آنے والے لیگی کارکن کی سیکیورٹی اہلکاروں نے درگت بنا ڈالی، نواز شریف نے کارکن کو  پاس بلا کر گلے لگالیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں یوم تکبیر پر کنونشن سے خطاب سے قبل اسٹیج پر سابق وزیراعظم نواز شریف، مریم نواز، شہباز شریف اور پرویز ملک سمیت دیگر رہنما بھی موجود تھے۔

اس دوران ایک لیگی کارکن نے تیزی کے ساتھ آگے بڑھتے ہوئے اپنے قائد سے ہاتھ ملانے کی کوشش کی جس پر سیکیورٹی اہلکاروں نے اسے دبوچ لیا اور شدید تشدد کا نشانہ بنایا اور اس کپڑے تک پھاڑ ڈالے۔

 اس موقع پر مریم نواز صورتحال پر ہکا بکا رہ گئیں وہ سیکورٹی اہلکاروں کو روکتی رہیں لیکن محافظوں نے ایک نہ سنی اور اسے مکے اور گھونسے مارتے رہے۔

، بعد ازاں خواجہ سعد رفیق بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور انہوں نے کارکن کو پہچان کر اس سے معذرت بھی کی، بعد ازاں لیگی کارکن کو  نواز شریف کے ساتھ دوبارہ ملوایا گیا۔

اس سارے ڈرامے کے بعد نوازشریف نے کارکن کو قریب بلاکر گلے لگایا اور اس کی دلجوئی کی،  پٹنے والے کارکن نے شیر شیر کا نعرہ لگایا مریم نواز نے بھی مار کھانے والے کارکن کی طرف داری کی، پٹنے والا کارکن بعد میں لوگوں میں بیٹھا روتا رہا۔

واضح رہے کہ پنجاب حکومت کی وی وی آئی پی سیکورٹی سوالیہ نشان بن گئی ہے۔ لاہور میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کی تقریب میں دوسرا جبکہ احسن اقبال اور خواجہ آصف سمیت وی وی آئی پیز کو چند ماہ کے دوران چوتھی بار سیکورٹی خطرات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں