مسلم لیگ (ن) کی قیادت صدارتی امیدوار کے لیے فضل الرحمان کے نام پر ڈٹ گئی -
The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ (ن) کی قیادت صدارتی امیدوار کے لیے فضل الرحمان کے نام پر ڈٹ گئی

پیپلز پارٹی نے ہماری درخواست کو سنجیدہ نہیں لیا: مولانا فضل الرحمان

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) کی قیادت صدارتی امیدوار کے لیے فضل الرحمان کے نام پر ڈٹ گئی، سابق اسپیکر ایاز صادق نے پریس کانفرنس میں اعلان کیا کہ ن لیگ مولانا فضل الرحمان کو ہی ووٹ دے گی۔

تفصیلات کے مطابق مولانا فضل الرحمان کے نام پر ن لیگی ارکان کے اختلاف کے باوجود قیادت ان پر ڈٹ گئی ہے، ایاز صادق کا کہنا تھا کہ امید ہے پیپلز پارٹی بھی اپوزیشن کے امیدوار پر متفق ہوگی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا ’فضل الرحمان کے ووٹ اب بھی اعتزاز احسن سے زیادہ ہیں، اپوزیشن نے مولانا فضل الرحمان کے نام پر اتفاق کیا تھا، پیپلز پارٹی نے جلد بازی میں اعتزاز احسن کا نام دیا۔‘

سردار ایاز صادق کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی نے شہباز شریف کو ووٹ نہیں دیا تھا، ہم نے کوشش کی کہ معاملات اتفاق رائے سے حل ہوں، مسلم لیگ (ن) نے اپنا وعدہ پورا کیا ہے۔

مولانا فضل الرحمان


دوسری طرف مشترکہ پریس کانفرنس سے مولانا فضل الرحمان نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا ’ہم نے پیپلز پارٹی کی درخواست کو سنجیدگی سے لیا، لیکن پیپلز پارٹی نے ہماری درخواست کو سنجیدہ نہیں لیا۔‘

انھوں نے کہا کہ آصف زرداری سے درخواست کی کہ صدارتی الیکشن میں وقت کم ہے، اپوزیشن کا ایک امیدوار ہونا چاہیے، پوری اپوزیشن تو ایک پارٹی امیدوار کے حق میں دست بردار نہیں ہوگی، ایک پارٹی کے لیے پوری اپوزیشن کے حق میں بیٹھنا آسان ہے۔


یہ بھی پڑھیں:  فضل الرحمان کی نامزدگی پر ن لیگی ارکان میں اختلافات سامنے آ گئے


مولانا نے کہا ’ہماری کوشش ہوگی کہ پیپلز پارٹی سنجیدہ اپوزیشن کا کردار ادا کرے، اس سلسلے میں پیپلز پارٹی کی کیا مشکلات ہیں، کون سا دباؤ ہے یہ وہی بتا سکیں گے، تاہم یہ واضح ہے کہ ن لیگ کو اعتزاز احسن قبول نہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں