The news is by your side.

Advertisement

رانا تنویر اے آر وائی کے اینکرعادل عباسی سے الجھ پڑے

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کے رہنما رانا تنویر سوال کرنے پر پروگرام ’اعتراض ہے‘ کے میزبان عادل عباسی سے الجھ پڑے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما رانا تنویر نے پروگرام ’اعتراض ہے’ میں شرکت کی اس دوران میزبان عادل عباسی نے ان سے سوال کیا تو وہ غصے میں آگئے اور پروگرام ادھورا چھوڑ کر چلے گئے۔

اینکر عادل عباسی نے رانا تنویر سے سوال کیا تھا کہ ’قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس سے آپ لوگوں کی تسلی ہوگئی؟‘

رانا تنویر نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’تسلی کا لفظ کیوں استعمال کیا، آپ بات کو کیا رنگ دے رہے ہیں۔‘

مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ ’قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس وقت کی ضرورت تھی ہماری تسلی نہیں تھی، تسلی کا لفظ ہمارے لیے غلط استعمال کیا جارہا ہے۔‘

واضح رہے کہ گزشتہ روز قومی سلامتی کے ان کیمرہ اجلاس کے دوران اپنے چیمبر میں آمد کے موقع پر صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا کہنا تھا کہ پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں سوال وجواب کا سیشن ہوا اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے بھی ہمارے سوالات کے جواب دیئے ہیں۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ بہت سے ایشوز پر بریفنگ دی گئی، آج خارجہ پالیسی اور داخلی صورتحال پر بریفنگ دی گئی، کشمیر اور افغانستان کی صورتحال پر بھی بریفنگ ہوئی، موجودہ صورتحال پر بریفنگ اطمینان بخش ہے تاہم ان کیمرہ اجلاس کی تفصیل نہیں بتا سکتے البتہ بریفنگ جامع تھی، صورتحال پر بہت اچھے انداز میں بریفنگ دی گئی۔

صحافی کی جانب سے سوال کیا گیا تھا کہ امریکا کو اڈے نہ دینے کے حوالے سے بیان پر کیا کہیں گے جس پر شہباز شریف نے جواب دیا کہ وہ تو آپ کو پتہ ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں