The news is by your side.

Advertisement

نمونیا کیا ہے ؟ بیماری کی علامات اورعلاج

نمونیا پھپھڑوں اور نیچے کی سانس کی نالی میں انفیکشن کی وجہ سے ہوتا ہے، اس کی نشانیاں اور علامات کیا ہوتی ہیں اس کے علاج کیلئے کیا احتیاطی تدابیر اختیار کی جاتی ہیں۔

نمونیا ایک خطرناک مرض ہے جس کے باعث دنیا بھر میں ہر سال ہزاروں کی تعداد میں افراد ہلاک ہو جاتے ہیں۔ سبق ویب سائٹ کے مطابق نمونیا کی مختلف علامات ہوتی ہیں، جیسے سینے میں تکلیف، سانس لینے میں دشواری، زور دار کھانسی، گلے میں درد، شدید تھکاوٹ کا احساس اور بخار وغیرہ۔

اس کی دیگر علامات

اس کے علاوہ نمونیا کی علامات مختلف بھی ہوسکتی ہیں، وہ نزلہ و زکام یا نظامِ تنفس کے بالائی راستے کی علامات سے مماثلت رکھ سکتی ہیں،اس کی عام نشانیاں اور علامات مندرجہ ذیل ہیں۔

تیز بخار، کھانسی، سانس کا تیز تیز چلنا یا سانس لینے میں دشواری پیش آنا، پھیپھڑوں میں سے چٹخنے کی سی آوازیں آتی ہوں، بھوک کا نہ لگنا، کھانسی یا بلغم کو نگلنے کی وجہ سے قے ہونا، عام طور پر تھکن سے چور اور ذہنی، جِسمانی اور جذباتی طور پر پریشانی محسوس ہونا اور معدہ (پیٹ) کا درد بھی اس کی علامات میں شامل ہیں۔

نمونیا عام طور پر نزلہ یا انفلوئنزا سے شروع ہوتا ہے  جس کے بعد بیماری کے پھیپھڑوں میں گھر کرنے کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔ اگر نمونیا کسی وائرس کی وجہ سے ہوا ہو تو ابتدائی دنوں میں اس کی علامات انفلوئنزا جیسی ہوں گی۔

اس کے بعد کھانسی میں اضافہ ہو جاتا ہے اور بلغم بڑھ جاتی ہے، بخار میں بھی اضافہ ہوتا ہے اور سانس میں تنگی شروع ہو جاتی ہے۔

بیکٹریا سے ہونے والا نمونیا جسم کے درجہ حرارت میں اضافہ کرتا ہے جس وجہ سے پسینہ زیادہ آتا ہے، اسی طرح سانس لینے میں دشواری بھی ہونے لگتی ہے۔

نمونیا ہونے کے اسباب

نمونیا کسی وائرس یا بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتا ہے، یہ بذات خود متعدی مرض نہیں ہے البتہ اس کے جراثیم کسی دوسرے شخص کو متاثر کرسکتے ہیں۔

اگر نمونیا کسی وائرس کے نتیجے میں ہوا ہو تو یہ جراثیم میں تبدیل ہو جاتا ہے اور اس صورت میں شدید خطرناک شکل اختیار کر لیتا ہے۔

خطرے کے عوامل

نمونیا کا مقابلہ ایک صحت مند انسانی جسم باآسانی کر سکتا ہے، البتہ بچوں اور بوڑھوں کے لیے اس کا مقابلہ مشکل ہوتا ہے کیونکہ ان کی قوت مدافعت کمزور ہوتی ہے۔ سگریٹ نوشی کی عادت بھی نمونیا ہونے کا باعث بن جاتی ہے۔

علاج کیسے کیا جائے؟

ڈاکٹرز ابتدائی طور پر تو سینے کا ایکسرے تجویز کرتے ہیں جس سے پھیپھڑوں کے بارے میں صحیح معلومات ملتی ہیں۔
وائرس کے نتیجے میں ہونے والے نمونیا کے لیے اینٹی وائرس ادویات تجویز کی جاتی ہیں۔

نمونیا سے کیسے بچا جاسکتا ہے

بیماری سے بچاؤ کے لیے ویکسین لگوانے کی تجویز دی جاتی ہے جو سب سے مؤثر حل بھی سمجھا جاتا ہے۔ نمونیا اکثر انفلوئنزا کی وجہ سے ہوتا ہے، اسی لیے ہر سال فلو ویکسین لگوانا ہی اس سے بچاؤ کا بہترین حل ہو سکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں