The news is by your side.

Advertisement

”ہر مداخلت کے پیچھے کوئی نہ کوئی سازش ہوتی ہے“

پاکستان کے معروف شاعر امجد اسلام امجد نے لفظ ”سازش“ اور ”مداخلت“ کی تشریح کر دی ہے۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندہ خصوصی سے خصوصی گفتگو کے دوران معروف شاعر امجد اسلام امجد نے ”سازش“ اور ”مداخلت“ کا مفہوم بتا دیا۔

امجد اسلام امجد نے کہا کہ اردو میں سازش اور مداخلت کے الگ الگ معنیٰ ہیں لیکن ان کا آپس میں گہرا تعلق ہے، سازش ہوتی ہے تب ہی  مداخلت ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہر مداخلت کے پیچھے کوئی نہ کوئی سازش ضرور ہوتی ہے تب ہی مداخلت کی جاتی ہے، اس کے پیچھے ایک مخالف سوچ بھی ہوتی ہے۔

معروف شاعر نے کہا کہ جب انگریزوں اور فرانسیسیوں نے برصغیر پر حملہ کیا تھا تو اس کے پیچھے بھی ایک پلانگ تھی، وہ پلانگ دراصل سازش تھی، سازش اور مداخلت دونوں آپس میں کزن یا بہنیں ہیں۔

گفتگو کے دوران امجد اسلام امجد نے دلچسپ قصے بھی سنائے۔ انہوں نے بتایا کہ میڈم نور جہاں نے میرے لکھے گانے میں لفظ ”ساجنا“ کو ”سجنا“ پڑھا، نور جہاں نے غلطی پر مجھ سے پوچھا آپ کو ”سجنا“ اچھا نہیں لگا، میں ان کو کیا جواب دیتا؟

Comments

یہ بھی پڑھیں