The news is by your side.

Advertisement

معروف شاعر نصیر ترابی انتقال کر گئے

کراچی: معروف شاعر نصیر ترابی کراچی میں انتقال کر گئے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق اردو شعر و ادب کا ایک روشن چراغ آج بجھ گیا، نامور شاعر، ماہر لسانیات اور نقاد نصیر ترابی آج کراچی میں انتقال کرگئے۔

ان کی عمر 75 برس تھی، حیدر آباد دکن میں پیدا ہونے والے نصیر ترابی معروف شیعہ ذاکر علامہ رشید ترابی کے صاحب زادے تھے۔

ادبی حلقوں میں ان کی تحقیقات اور تخلیقات کو سند کا درجہ حاصل تھا، ان کی مشہور زمانہ غزل ’وہ ہم سفر تھا مگر اس سے ہم نوائی نہ تھی‘ کو عوامی حلقوں میں بے حد پذیرائی حاصل ہوئی۔

نصیر ترابی 15 جون 1945 کو حیدر آباد دکن میں پیدا ہوئے، تقسیم ہند کے بعد پاکستان آگئے تھے، اور کراچی میں سکونت اختیار کی، 1968 میں انھوں نے جامعہ کراچی سے تعلقات عامہ میں ایم اے کیا۔

نصیر ترابی کی شاعری کا آغاز 1962 میں ہوا، ان کا اوّلین مجموعۂ کلام ’عکس فریادی‘ 2000 میں شائع ہوا، وہ افسر تعلقات عامہ، ایسٹرن فیڈرل یونین انشورنس کمپنی میں ملازم رہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں