The news is by your side.

Advertisement

سرگودھا میں کمسن بچوں سے زیادتی کی ویڈیو بنانے والے 6 ملزمان گرفتار

سرگودھا : صوبہ پنجاب کے شہر سرگودھا میں کمسن بچوں سے زیادتی کی ویڈیو بنانے والے چھ ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا، پولیس نے سات نامزد اور پانچ نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ پنجاب کے شہر سرگودھا کے علاقے لک موڑکے رہائشی نے کمپیوٹر کی دکان پر فحش ویڈیوزکاپی ہونے کی اطلاع پولیس کودی تھی لیکن مقامی پولیس تھانہ جھال چکیاں نے روایتی سستی کا مظاہرہ کیا ، جس پر شہری نے کچھ ویڈیوز ڈی پی اوسرگودھا کو بھجوائیں ۔

ڈی پی او کے حکم پر پولیس نے چھاپہ مارکر چھ ملزمان کو گرفتار کرلیا اور وران کے قبضہ سے فحش اور عریاں ویڈیوز بھی برآمد کر لی گئیں۔

پولیس ذرائع کے مطابق ملزمان سے تفتیش کا سلسلہ جاری ہے اور بہت جلد اس سلسلہ میں حقائق سے پردہ اٹھایا جائے گا۔

پولیس ذرائع کے مطابق ملزمان طویل عرصے سےبچوں سےزیادتی کی ویڈیوبناکربلیک میلنگ میں ملوث ہیں، اہل علاقہ نے الزام لگایاکہ پولیس ملزمان کو وی آئی پی پروٹوکول دے رہی ہے، مبینہ اسکینڈل میں ملوث ملزمان بااثر ہیں اور ان کے خلاف کوئی بھی گواہی دینے کو تیار نہیں۔

ذرائع کے مطابق واقعے میں ملوث ملزمان کے خلاف ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سرگودھا نے جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم بھی تشکیل دے دی ہے، جس نے تحقیقات شروع کر دی ہیں جبکہ ابتدائی تفتیش کے مطابق ملزمان سے 13 نوعمر لڑکوں سے زیادتی اور بدفعلی کی ویڈیوز ملی ہیں۔


مزید پڑھیں :  قصورکے بعد اب جڑانوالہ میں لڑکوں سے زیادتی کا انکشاف


پولیس نے مقامی شہری محمد سلیمان کی مدعیت میں سات نامزد اور پانچ نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے، ملزمان اسلحے کے زور پر بچوں کے ساتھ زیادتی کی ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر اَپ لوڈ کرتے تھے۔

یاد رہے فیصل آباد کی تحصیل جڑانوالہ میں لڑکوں سے زیادتی کا اسکینڈل سامنے آیا تھا، جس کے بعد کئی لڑکوں سے زیادتی کی تصویریں اور ویڈیوز سامنے آئی تھیں ، ملزمان کمسن لڑکوں سے زیادتی کے بعد ویڈیو بناتے اور پھر بلیک میل کرتے تھے۔

اس سے قبل قصور میں بھی لڑکوں سے زیادتی اور بلیک میلنگ کا انکشاف ہوا تھا کم از کم پانچ رکنی گروہ سال دو ہزارتیرہ سے یہ گھناؤنا کام کر رہا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں