The news is by your side.

Advertisement

پولیس کا خواتین پر بدترین تشدد، بھارتی حکمران خاموش، ویڈیو وائرل

خواتین کو بااختیار بنانے کے دعویدار بھارتی حکمرانوں نے ریاست بہار میں خواتین، بچوں اور مردوں کو بدترین تشدد کا نشانہ بنانے پر چپ سادھ لی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارتی ریاست بہار کے ضلع گیا میں پولیس نے معمولی تنازعے پر خواتین و مردوں کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا ہے جس کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ پولیس نے خواتین کو ہاتھ پاؤں باندھ کر زمین پر بٹھایا ہوا ہے۔

سوشل میڈیا پر سوال اٹھائے جارہے ہیں ضلع کی ایس ایس پی خاتون ہے اور بہار حکومت مسلسل خواتین کو بااختیار بنانے کا دعویٰ کرتی ہے، اس کے باوجود ضلع گیا میں خواتین کو اس طرح مار پیٹا گیا۔

رپورٹ کے مطابق بالو گھاٹ کی حد بندی کے دوران پولیس اور مقامی افراد میں جھڑپ ہوئی تھی۔

پولیس نے اس دوران چھ خاتون پوجا کماری، گیتا دیوی، رینو دیوی، منی دیوی، رنجو دیوی کے ساتھ ایک تیرہ سالہ بچی اور چار مردوں کو گرفتار کیا، جن کے ہاتھ پیچھے سے باندھ کر پہلے زمین پر گھنٹوں بیٹھائے رکھا اور اس کے بعد سبھی کو پولیس کی گاڑی میں بیٹھا کر عدالت میں پیش کیا۔

اس حوالے سے تھانہ انچارج کا کہنا تھا کہ بالواٹھا میں رکاوٹ پیدا کرنے اور پولیس پر حملہ کرنے کے خلاف تھانہ میں محکمہ کان کنی کے افسر کی تحریری شکایت پر ایف آئی آردرج ہوئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں