The news is by your side.

Advertisement

بہاولپور کے ڈی پی او کوممبر قومی اسمبلی کے گھر پہ چھاپہ مہنگا پڑ گیا

لاہور: بہاولپور کے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر شارق کمال صدیقی،ڈی ایس پی اللہ داد اور ایس ایچ او کو ممبر قومی اسمبلی کے گھر پہ چھاپہ مارنے کی پاداش میں معطل کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ن لیگی ممبر قومی اسمبلی عالم داد لالیکا کے منشی عمران سندھو اُس وقت غصے میں آگئے جب گشت پر مامور پولیس اہلکاروں نے انہیں تلاشی کے لیے روکا،انہوں گھونسوں اور لاتوں سے پولیس اہلکار کی تواضع کی۔

پولیس اہلکار کی شکایت پر ڈی پی او نے ممبر قومی اسمبلی کے منشی عمران سندھو کے خلاف ایف آئی آر درج کا حکم دیا،جس کے بعد ممبر قومی اسمبلی کے گھر پر چھاپہ مار کر ملزم لزم عمران سندھو کو گرفتا کر لیا۔

ممبر قومی اسمبلی کی شکایت پر وزیرِاعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے انکوئری کمیٹی مقررکی،کمیٹی نے تحقیقات کے بعد ڈی ایس پی بہاولپور اللہ داد لک اور ایس ایچ او کو واقعہ کا ذمہ دار ٹہراتے ہوئے معطل کردیا۔

تاہم ممبر قومی اسمبلی کا جوشِ انتقام ٹھنڈا نہ ہوا اور انہوں نے وزیرِ اعظم میاں محمد نواز شریف سے ڈی پی او کے خلاف کاروائی کی استدعا کی،جس کے بعد ڈی پی او کی خدمات صوبہ سے واپس لے کر لے وفاق کو دے دی گئی،اور یوں ڈی پی او کو دارلخلافہ کی راہ دکھائی.

ذرائع کے مطابق ممبر قومی اسمبلی عالم داد لالیکا باربار رابطہ کرنے کے باوجود معاملے پر تبصرے کے لیے دستیاب نہ ہوسکے،تاہم ان کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پولیس افسران کو ممبر قومی اسمبلی کے گھر پر چھاپہ مارنے کے بجائے ملزم عمران سندھو کے گھر پہ چھاپہ مارنا چاہیے تھا، ملزم ممبر قومی اسمبلی کی زرعی اراضی کی دیکھ بھال اور اجناس کی خرید و فروخت کے معاملے پر مامور تھا،ملزم یہاں رہتا نہیں تھا۔

واضع رہے دو سال قبل ایس ایس پی اسلام آباد کو بھی محکماتی قواعد و ضوابط کے بجائے ’’سیاسی قوتوں‘‘ کی زبانی ہدایت پر ہٹا دیا گیا تھا،جس کے بعد سے اب تک وہ انصاف کی دہائی لیے عدالتوں کے دروازے کھٹکھٹا رہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں