The news is by your side.

Advertisement

سندھ پولیس کے برطرف اہلکاروں کا احتجاج، مظاہرین پر لاٹھی چارج

کراچی: صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں پریس کلب کے باہر سندھ پولیس کے برطرف اہلکاروں نے احتجاج شروع کردیا، لیکن صورتحال اس وقت کشیدہ ہوگئی جب وردی میں ملبوس پولیس والے اپنے ہی پیٹی بند بھائیوں پر ٹوٹ پڑے اور ان پر لاٹھی چارج شروع کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے 18 سو سے زائد اہلکاروں کو 18 دسمبر 2015 کو برطرف کیا گیا تھا۔ تین ماہ قبل برطرف اہلکاروں کا این ٹی ایس کے ذریعے ٹیسٹ لیا گیا جس میں صرف 138 کامیاب ہوسکے تھے۔

رواں برس آئی جی سندھ کے حکم پر محکمہ جاتی کمیٹی کے ذریعے 349 اہلکاروں کو بحال کیا جا چکا ہے لیکن اب بھی برطرف کیے جانے والوں اہلکاروں کی بڑی تعداد باقی ہے جو آج پریس کلب کے باہر سراپا احتجاج ہے۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ جعلی اور غیر قانونی بھرتی کیے جانے والے اہلکاروں کو جس نے بھرتی کیا وہ اصل مجرم ہیں اور انہیں گرفت میں لایا جائے۔

ایک اہلکار کا کہنا تھا کہ جن افسران نے غیر قانونی بھرتیاں کیں وہ کیوں اب تک پولیس کا حصہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جس وقت بھرتی کیا گیا اس وقت پرانے طریقہ کار سے امتحان لیا گیا، اب کہتے ہیں کہ بحالی کے لیے این ٹی ایس ٹیسٹ سے گزرنا ہوگا۔ کیا سابقہ آئی جی صاحبان بھی نقلی اور موجودہ آئی جی اصلی پولیس افسر ہے؟

مظاہرین کا کہنا تھا کہ پچھلے ماہ ہم سے وعدہ کیا گیا کہ 1 ماہ میں مسئلہ حل ہوجائے گا، معاملہ حل نہ ہونے پر دوبارہ احتجاج پر مجبور ہوئے۔ فاقہ کشی سے بیزار ہو کر گھروں سے عہد کر کے آئے ہیں کہ اس بار واپس نہیں جانا، بحال ہوں گے ورنہ احتجاج جاری رہے گا۔

ایک اہلکار نے بتایا، ’ہم نے گھر بیچے، اپنی خواتین کے زیور بیچے اور نوکریاں حاصل کیں، لیکن بھرتی نہیں کیا گیا‘۔

ان برطرف کیے جانے والوں میں بعض شہید اہلکار بھی شامل ہیں۔

ایک برطرف اہلکار پیٹرول لیے خود سوزی کا ارادہ بھی رکھتا ہے اور اس کا مطالبہ ہے کہ اسے اس کی نوکری پر بحال کیا جائے۔


احتجاج ہنگامہ آرائی میں تبدیل

بعد ازاں ڈی ایس پی صدر نے مظاہرین سے مذاکرات کی کوشش کی لیکن برطرف اہلکاروں نے انکار کرتے ہوئے کہا کہ مذاکرات صرف اعلیٰ افسران سے کیے جائیں گے۔

تھوڑی ہی دیر بعد یہ احتجاج ہنگامہ آرائی میں تبدیل ہوگیا جس کے بعد وردی میں ملبوس پولیس والوں نے اپنے ہی برطرف کیے جانے والے پیٹی بند بھائیوں پر واٹر کینن کا استعمال کیا۔

پولیس نے انہیں منتشر کرنے کے لیے ان پر لاٹھی چارج بھی کیا جبکہ احتجاج کرنے والے متعدد سابق اہلکاروں کو گرفتار بھی کیا جا چکا ہے۔

پولیس کے لاٹھی چارج سے 3 مظاہرین زخمی بھی ہوگئے جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں