The news is by your side.

Advertisement

شارجہ، رہائشی عمارت میں آگ تیزی سے پھیلنے کی بڑی وجہ سامنے آگئی

شارجہ: متحدہ عرب امارات کے شہر شارجہ میں 48 منزلہ رہائشی عمارت میں آگ تیزی سے پھیلنے کی بڑی وجہ سامنے آگئی۔

خلیج ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق شارجہ پولیس کا کہنا ہے کہ 48 منزلہ رہائشی عمارت ابکوٹاور میں آتشزدگی ممنوعہ کلیڈنگ شیٹس کی وجہ سے تیزی سے پھیلی جو عمارت کے بیرونی حصے میں خوبصورتی کے لیے لگائی جاتی ہیں۔

آپریشن روم کے قائمقام ڈائریکٹر اور شارجہ پولیس کے محکمہ فارنسک کے ڈائریکٹر جنرل، بریگیڈیئر احمد الرسکل نے بتایا کہ النہدہ آگ کی ابتدائی تحقیقات سے انکشاف ہوا ہے کہ ممنوعہ کلیڈنگ شیٹس ٹاور کے اگلے حصہ میں استعمال ہوئی تھی جس کے سبب آگ تیزی سے پھیلی، آتشزدگی کے واقعے کی تفتیش جاری ہے۔

Sharjah restrict use of aluminium cladding for high rise building

بریگیڈیئر السرکل نے کہا کہ ایلومینیم کمپوزٹ کلیڈنگ شیٹس کے استعمال پر شارجہ میں 2017 سے پابندی عائد ہے، پابندی اس لیے عائد کی تھی کہ 2015، 2016 اور 2017 میں بڑے پیمانے پر آگ پھیلنے کی وجہ یہی کلیڈنگ شیٹس بنی تھیں۔

واضح رہے کہ  شارجہ میں واقعہ 48 منزلہ رہائشی عمارت ابکو ٹاور میں گزشتہ رات اچانک آگ بھڑک اٹھی جس نے کئی فلورز کو اپنی لپیٹ میں لے لیا جبکہ آتشزدگی کے نتیجے میں 7 افراد معمولی زخمی ہوئے۔

آتشزدگی کے نتیجے میں زخمی ہونے والے افراد کو فوری طور پر طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا۔

ریسکیو عملے کی جانب سے عمارت کے اندر موجود 250 فیملیز کو ریسکیو کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق بلڈنگ میں آتشزدگی کی اطلاع ملنے پر فائر فائٹرز کی ٹیم موقع پر پہنچی اور چند گھنٹوں کی جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پایا۔

عمارت میں آگ لگنے کے سبب قریب موجود 5 سے زائد دیگر عمارتوں کو بھی خالی کرالیا گیا، آتشزدگی سے ملبہ اور دیگر سامان گرنے کی وجہ سے بلڈنگ کے نیچے کھڑی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا۔

واضح رہے کہ آگ لگنے کی وجہ فوری طور پر معلوم نہیں ہوسکی ہے تاہم تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال اپریل کے وسط میں یو اے ای کے شہر العین میں ایک گھر میں بھی آگ بھڑک اٹھی تھی جس کے نتیجے میں 6 پاکستانی جاں بحق ہوگئے تھے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں