The news is by your side.

Advertisement

کشمیر میں مودی تنہا ہے، بھارت میں بھی سیاسی جماعتیں دور ہو رہی ہیں: فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ کشمیر میں نریندر مودی تنہا ہے، بھارت میں بھی سیاسی جماعتیں اس سے دور ہو رہی ہیں، عمران خان کی دنیا میں حیثیت سے مودی مشکلات کا شکار ہے۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں کیا، فواد چوہدری نے کہا کہ کشمیر میں مودی کا کوئی نام لیوا نہیں ہے، کشمیر کے ایشو میں نریندر مودی خود بھی پھنس گئے ہیں، وہ خود بھارت میں تنہا ہو رہا ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ آخری تین سالوں میں مولانا فضل الرحمان کی کشمیر کمیٹی نے 17 کروڑ روپے خرچ کیے، لیکن اب فخرامام اور شیری مزاری جیسے لوگ بہت افیکٹیو ہیں، کشمیر کمیٹی میں اور لوگ بھی شامل کیے جا رہے ہیں۔

وفاقی وزیر نے محرم کے چاند کے سلسلے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس بار بھی ہم نے یکم ستمبر کو محرم کے آغاز کی پیش گوئی کی تھی، ہمیں جلدی نہیں ہے، آپ اور دیکھ لیں، آگر آپ کچھ ٹھیکے داری مزید چلانا چاہتے ہیں تو چلا لیں، ہمارا جو کام تھا ہم نے کر کے دے دیا ہے، باقی کام اسلامی نظریاتی کونسل کا ہے۔

کرتارپور راہ داری سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ اس کوریڈور سے بھارت کی سکھ برادری کو سہولت ملنے جا رہی ہے، کرتارپور سکھ برادری کے لیے مذہبی عقیدت کی حیثیت رکھتا ہے، اب قوموں کے مفادات کو مد نظر رکھ کر فیصلے کیے جاتے ہیں۔

فواد چوہدری نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے کافی کوشش کی ہے کہ ٹینکوکریٹس کو بھی سیاسی فیصلوں میں شامل کیا جا سکے، پارلیمنٹری ڈیمو کریسی میں ووٹر اہم ہوتا ہے، الیکٹڈ لوگوں کی فیصلہ سازی کی حیثیت ہوتی ہے، وزیر اعظم بھی اس کی اہمیت کو سمجھتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ میں نے آرٹیکل میں لکھا تھا کہ صوبائی حکومتوں کا انفرا اسٹرکچر درست نہیں، چیف سیکریٹری اتنے پاور فل ہیں کہ وزرا کو بائی پاس کر سکتے ہیں، شہباز شریف، قائم علی شاہ نے جیسے گورننس کی وہ کلاسک کیس ہے، ان لوگوں نے اپنے وسائل کو بہت بری طرح ضایع کیا۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ پنجا ب میں ٹرانسفر اور پوسٹیں زیادہ ہوئی ہیں، چیف سیکریٹری اور آئی جی صاحب کو اس معاملے کو دیکھنا چاہیے، پنجاب میں سیکریٹریز کی تقرریاں بھی بہت جلدی ہوئی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں