The news is by your side.

Advertisement

لودھراں این اے 154میں ضمنی انتخابات، پولنگ ختم، گنتی جاری

لودھراں: این اے 154 لودھراں میں ضمنی انتخابات کامعرکہ سج گیا، سخت سیکیورٹی میں پولنگ کاعمل ختم ہوچکاہے۔

لودھراں میں سیاسی جماعتوں کےپانچ امیدواران میدان میں تھے جبکہ پندرہ آزاد امیدواربھی قسمت آزمارہے ہیں۔

اصل مقابلہ مسلم لیگ ن کے صدیق بلوچ اورپاکستان تحریک انصاف کے جہانگیرترین کے درمیان  ہے۔

آج ہونے والے ضمنی انتخابات میں دولاکھ اٹھائیس ہزارآٹھ سو ستر مردآج رائے شماری میں حصہ لے رہے ہیں اورایک لاکھ نوے ہزارتین سوبارہ خواتین ووٹرز نے اپناحقِ رائے دہی استعمال کیا۔

حلقے کےچار لاکھ انیس ہزارایک سو بیاسی ووٹر کیلئےتین سو تین پولنگ اسٹیشنز بنائے گئے ہیں جن میں سے چھ پولنگ اسٹیشن کو حساس قراردیا گیا ہے۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے انتخابی عمل کے لئے تین سو تین پریزائیڈنگ افسر،آٹھ سوانتالیس اسسٹنٹ پریزائیڈنگ افسران تعینات کئے گئے تھے۔

واضح رہے کہ الیکشن ٹربیونل کی جانب سے مسلم لیگ ن کے صدیق بلوچ کونااہل قراردیا تھا تاہم سپریم کورٹ نے ٹریبیونل کے فیصلے کو کالعدم قرار دیتے ہوئے حلقے میں دوبارہ انتخابات کا انعقاد کرانے کا حکم صادرکیا تھا۔


جہانگیر ترین کی اے آروائی سے گفتگو


تحریک انصف کے امید وار برائے این اے 154 جہانگیر ترین نے اے آروائی نیوز سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ فوج نے بہترین طریقے سے نظم ونسق سنبھالا ہوا ہے جس کے سبب دھاندلی نہیں ہورہی۔

انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ آج کہ ضمنی انتخابات میں ان کی کامیابیہ یقینی ہے۔


تحریک انصاف اورمسلم لیگ ن کے کارکنان میں تصادم


لودھراں میں پولنگ اسٹیشن 18 پر پاکستان تحریک انصاف اورمسلم لیگ ن کے کارکنان میں تصادم کا واقع پیش آیا ہے۔

تصادم کےنتیجے میں دونوں جانب کے کارکنان معمولی زخمی ہوئے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں