The news is by your side.

Advertisement

غریب دکاندار کے 60 ہزار روپے کے پھل دفن کردیئے گئے

حیدرآباد : غریب دکاندار میں کورونا وائرس کے خدشے کے پیش نظر بلدیہ حکام نے 60ہزار روپے مالیت کے پھل زمین میں دفن کردیئے، گزشتہ روز ایک کورونا زدہ نرس نے اس سے پھل خریدے تھے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست حیدرآباد کے کوکا پیٹ علاقہ میں ایک تاجر کے تقریبا 60 ہزار روپے کے پھل دفن کر دیے گئے، کوکا پیٹ میں کئی برسوں سے یہ دکاندار پھل فروخت کر رہا تھا۔ شہر حیدرآباد کے بچوں کے اسپتال کی ایک نرس جو کووڈ 19 سے متاثر پائی گئی تھی نے چند روز قبل اس دکان سے پھل خریدے تھے۔

یہ واقعہ اس وقت منظر عام پر آیا جب بارہویں جماعت کی طالبہ دیویا اکشیتا نے اس حوالے سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کیا۔

دیویا نے اپنی ٹویٹ میں بتایا کہ وہ اپنے اپارٹمنٹ میں گزشتہ دو برس سے رہائش پذیر ہیں تب ہی سے وہ اس تاجر کو دیکھ رہی ہیں، نیلوفر اسپتال کی ایک نرس نے چند روز قبل اس دکان دار سے پھل خریدے تھے اور اس سے اگلے دن وہ کورونا سے مثبت پائی گئی۔

جب انتظامیہ نے اس سے پوچھا تو اس نرس نے بتایاکہ وہ اس فروٹ والے کی دکان پر آئی تھی۔ بعد ازاں اس دکاندار کا طبی معائنہ کیا گیا اور اس میں کورونا وائرس کی علامات دیکھ کر اس کو قرنطینہ کر دیا بعد ازاں  بلدیہ حکام نے اس کے تمام پھل ایک گاڑی میں بھر کر ان کو نارسنگی سرکل کے قریب دفن کر دیے۔

دیویا نے بتایا کہ یہ دکاندار  کافی غریب ہے  اور روزانہ پھل فروخت کرکے زندگی بسر کر رہا تھا اب وہ مالی طور پر  مشکلات کا شکار ہو گیا ہے، دیویا نے اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ اس دکاندار کو معاوضہ ادا کیا جائے۔

دوسری جانب نارسنگی تھانے کے سب انسپکٹر آر لکشمن نے میڈیا کو بتایا کہ حکام نے اس پھل فروخت کرنے والے کو مناسب معاوضہ دلانے کی یقین دہانی کروائی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں