The news is by your side.

Advertisement

بچوں کو جنسی تشدد کا نشانہ بنانے والے پادریوں کے خلاف کارروائی کا وقت آگیا، پوپ فرانسس

ویٹی کن سٹی: رومن کیتھولک میسحیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس نے کہا ہے کہ بچوں کو جنسی تشدد کا نشانہ بنانے والے پادریوں کے خلاف کارروائی کا وقت آن پہنچا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق پاپائیت کے مرکز ویٹی کن سٹی میں شروع ہونے والی کانفرنس کے افتتاحی خطاب میں پوپ فرانسس کا کہنا تھا کہ پوری دنیا کی نگاہیں ہماری طرف امید سے دیکھ رہی ہیں اور اب مجرموں کے خلاف ٹھوس اقدامات کا وقت آپہنچا ہے۔

اس کانفرنس کے دوران 114 اعلیٰ بشپ کو ایسے واقعات روکنے اور مذہبی تعلیمات مکمل کرنے کے بعد دنیا بھر میں خدمات کے لیے بھیجا جائے گا۔

کانفرنس میں مسیحیت کے دیگر موضوعات پر بھی گفتگو کی گئی تاہم کانفرنس کا اہم مقصد پادریوں کی جانب سے جنسی تشدد کی آنے والی خبروں کے حوالے سے تھا۔

مزید پڑھیں: جنسی استحصال کا معاملہ، پوپ فرانسس سے استعفے کا مطالبہ

پوپ فرانسس نے موجود بشپس اور دیگر مذہبی پیشواؤں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ معصوم بچوں کی رونے کی آوازیں سنیں جو ہم سے انصاف کا مطالبہ کررہے ہیں۔

پوپ فرانسس نے رواں ماہ کے آغاز میں مشرق وسطیٰ کے دورے پر اعتراف کیا تھا کہ چرچز کے پادری بچوں اور خواتین کو جنسی زیادتی اور تشدد کا نشانہ بنانے سمیت انہیں جنسی غلام بنائے رکھنے میں ملوث رہے ہیں۔

واضح رہے کہ یہ کانفرنس ایسے موقع پر ہورہی ہے جب کہ ویٹی کن سٹی کے حوالے سے فرانس کے ایک صحافی کی جانب سے لکھی گئی کتاب کو بھی فروخت کے لیے پیش کیا جارہا ہے۔

اس کتاب میں انکشاف کیا گیا ہے کہ پاپائیت کے مرکز ویٹی کن سٹی کے 80 فیصد پادری اور مذہبی پیشوا ہم جنس پرست ہیں اور وہ اسی عمل کی ترغیب کرتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں