The news is by your side.

Advertisement

کھچوے نے سست ہونے کی روایت توڑ ڈالی

نیویارک: تالاب سے فرار ہونے والا کچھوا اڑتالیس گھنٹوں کی مسافت طے کرنے کے بعد اپنے آبائی گھر واپس پہنچ گیا۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق دو سو پاؤنڈ وزنی بزرگ کچھوے کا نام سپارک پلگ ہے، جس کی عمر 60 سال ہے۔

رپورٹ کے مطابق افریقی نسل کا کچھوے سپارک پلگ کو ایٹووا کاؤنٹی کے تالاب میں جس کے گرد باڑ نصب تھی، رکھا گیا تھا، ایک روز وہ کسی طرح باڑ سے باہر نکلنے میں کامیاب ہوا اور رینگتا ہوا قریب سے گزرنے والی سڑک کے کنارے آپہنچا۔

اسی دوران ایک گاڑی کا وہاں سے گزر ہوا، گاڑی پر سوار شخص کی نظر کچھوئے پر پڑی تو وہ اسے پسند آ گیا، اس کا مارشل کاؤنٹی میں 200 ایکڑ کا ایک زرعی فارم اور ایک تالاب بھی ہے، وہ کچھوے کو کسی طرح اٹھا کر اپنے ساتھ لے گیا اور اسے اپنے تالاب میں چھوڑ دیا جبکہ کچھوئے کا اصل مالک ٹائی ہیرس ہے۔ اسے جانور پالنے کا شوق ہے اور یہ کچھوا بہت پہلے وہ نیوجرسی سے لایا تھا اور اس کی پرورش کر رہا تھا۔A 200-pound, 60-year-old tortoise has been found after escaping an  enclosure and traveling through 2 counties | Business Insider Indiaٹائی ہیرس نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ جب مجھے سپارک پلگ تالاب میں نظر نہیں آیا تو میں نے اس کی تلاش شروع کی، اس کے رینگنے کے نشانات سڑک تک تو جاتے تھے، لیکن اس سے آگے کی کچھ خبر نہیں تھی، بعد ازاں میں نے سوشل میڈیا پر اس کی گمشدگی کے متعلق لکھا۔

ہیرس کا کہنا ہے کہ جو شخص اسے اپنے ساتھ لے گیا تھا، اسے اگلے روز کچھوا اپنے تالاب میں نظر نہیں آیا، سپارک پلک کی تلاش شروع ہوئی، اس کے رینگنے کے نشانات سویابین کے کھیتوں تک جاتے تھے، اس کے بعد وہ کہاں گیا، کچھ پتا نہیں چل سکا، ہم مایوس ہو کر بیٹھ گئے کہ اب وہ کہاں ملے گا۔ہیرس نے بتایا کہ سپارک پلک نئے تالاب سے جمعرات کو فرار ہوا تھا، ہفتے کی صبح میری نظر اپنے تالاب پر پڑی تو حیرت کی انتہا نہ رہی، کچھوا وہاں موجود تھا، وہ اپنے فرار ہونے کے بعد دو اضلاع اور سویابین کے کھیتوں سے رینگتا ہوا، 48 گھنٹوں میں اپنے آبائی تالاب میں واپس پہنچ گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں